دنیا کو کورونا وائرس کے دوبارہ سر اٹھانے پر پابندیاں لگانے کے لئے تیار رہنا چاہیے

عالمی ادارہ صحت کا کہنا ہے کہ ممالک آہستہ آہستہ اور احتیاط سے لاک ڈاؤن میں نرمی ضرور کریں لیکن اس کے ساتھ کورونا وائرس کے دوبارہ سر اٹھانے پر پابندیاں لگانے کے لئے بھی تیار رہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے رائٹرز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ عالمی ادارہ صحت کا کہنا ہے کہ ممالک آہستہ آہستہ اور احتیاط سے لاک ڈاؤن میں نرمی ضرور کریں لیکن اس کے ساتھ کورونا وائرس کے دوبارہ سر اٹھانے پر پابندیاں لگانے کے لئے بھی تیار رہیں۔ ڈبلیو ایچ او کا کہنا ہے کہ اگر کورونا وائرس قابو میں آرہا ہے تب بھی لوگوں کو ایک دوسرے سے فاصلے، صفائی اور صحت سے متعلق احکامات اور احتیاطی تدابیر پر عمل درآمد جاری رکھنا چاہیے۔ اس کے ساتھ کورونا وائرس کی جانچ کے لئے ٹیسٹ کا طریقہ کار بھی جاری رہنا چاہیے۔

عالمی ادارہ صحت کے ڈاکٹر مائیک ریان نے پریس کانفرنس میں کہا کہ عالمی وبا کے دوران لاک ڈاؤن کی وجہ سے حکومتوں کو ہونے والے معاشی اور دیگر نقصانات کا اندازہ ہے۔ ادھر عالمی ادارے کے ڈی جی ڈاکٹر ٹیڈرس نے کورونا وائرس سے متعلق جنوری کے آخر میں ایمرجنسی کے اعلان کے اقدام کا دفاع کیا اور کہا کہ 30 جنوری کے اعلان کے بعد دنیا کے پاس کافی وقت تھا کیونکہ اس وقت چین سے باہر کورونا وائرس کے صرف 82 کیسز تھے اور کوئی موت واقع نہیں ہوئی تھی۔

News Code 1899850

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 7 =