مقبوضہ کشمیرمیں فوٹو جرنلسٹ خاتون کے خلاف غداری کا مقدمہ درج

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج نے مظلوم کشمیریوں کی آواز دبانے کی ایک اور کوشش کی ہے جس میں کشمیری فوٹو جرنلسٹ خاتون مسرت زہرا کے خلاف غداری کا مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے کشمیر ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج نے مظلوم کشمیریوں کی آواز دبانے کی ایک اور کوشش کی ہے جس میں کشمیری فوٹو جرنلسٹ خاتون مسرت زہرا کے خلاف غداری کا مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ فوٹو جرنلسٹ خاتون پر سوشل میڈیا پوسٹ کے ذریعہ ریاست مخالف سرگرمیوں کا الزام عائد کردیا گیا۔ فوٹو جرنلسٹ مسرت زہرا کا کہنا ہے کہ پولیس نے انہیں باضابطہ اپنے خلاف مقدمے کے اندراج سے آگاہ نہیں کیا، سوشل میڈیا کے ذریعے اس کا علم ہوا ہے۔ بھارتی پولیس کا دعویٰ ہے کہ مسرت زہرا اپنی سوشل میڈیا پوسٹس کے ذریعے نوجوانوں کو بھڑکا رہی ہیں اور بدامنی کو فروغ دے رہی ہیں۔مسرت زہرا کو یو اے پی اے ایکٹ کے تحت درج مقدمے میں دہشت گرد قرار دیا جاسکتا ہے۔ ادھر خواتین کی صحافتی تنظیموں نے مسرت زہرا کے خلاف مقدمے کی مذمت کی ہے۔

واضح رہے کہ مسرت زہرا نے تین دن پہلے سوشل میڈیا پر مقبوضہ کشمیر کی خاتون عارفہ جان کی تصویر شیئر کی تھی، جن کے شوہر کو بھارتی فوج نے سال 2000 میں جاں بحق کردیا تھا۔

News Code 1899565

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 7 + 5 =