بھارتی کیمپوں میں مقیم روہنگیا پناہ مسلمانوں کو شدید مشکلات کا سامنا

بھارتی کیمپوں میں مقیم روہنگیا پناہ گزین مسلمانوں کا کہنا ہے کہ ان کے کورونا وائرس سے پہلے بھوک کی وجہ سے ہلاک ہوجانے کے خدشات بڑھ گئے ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے الجزیرہ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ بھارتی کیمپوں میں مقیم روہنگیا پناہ گزین مسلمانوں کا کہنا ہے کہ ان کے کورونا وائرس سے پہلے بھوک کی وجہ سے ہلاک ہوجانے کے خدشات بڑھ گئے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق بھارت میں 21 دن کے لاک ڈاؤن سے جہاں عام آدمی سخت پریشانی اور اضطراب میں مبتلا ہوگیا ہے وہیں روہنگیا پناہ گزین کیمپوں میں پہلے سے مرجھائی ہوئی زندگی اب موت کا رقص دیکھ رہی ہے۔

بھارتی دارالحکومت نئی دہلی کے مدن پورہ  پناہ گزین کیمپ کے رہائشیوں نے شکایتوں کے ڈھیر لگاتے ہوئے کہا ہے کہ 21 دن کے لاک ڈاؤن سے ہماری زندگی اجیرن ہوگئی ہے اور لگتا ہے کورونا سے پہلے ہم بھوک سے مرجائیں گے۔

بھارت کے مختلف کیمپوں میں اس وقت 40 ہزار سے زائد روہنگیا مسلمان پناہ لیے ہوئے ہیں جہاں پہلے ہی سہولیات کا فقدان ہے اور انتہائی ضرورت کی اشیا بھی ناپید ہیں ایسے میں کورونا وائرس نے مشکلات میں اور اضافہ کردیا ہے جبکہ مودی سرکار کے پاس اس صورت حال سے نمٹنے کیلیے کوئی لائحہ عمل نہیں ہے۔واضح رہے کہ وزیراعظم مودی نے بغیر کسی منصوبہ بندی کے ملک بھر میں 21 دن کے لیے سخت لاک ڈاؤن کا اعلان کردیا ہے جس سے پورے ملک میں افراتفری پھیل گئی ہے اور بے سرو سامانی کا عالم ہے۔

News Code 1899060

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 5 =