پاکستان میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد زیادہ/ حالات خراب

پاکستان میں ٹاسک فورس سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے چیئرمین ڈاکٹر عطاء الرحمٰن نے کہا کہ کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد کہیں زیادہ ہے حالات کو بگڑتے ہوئے دیکھ رہا ہوں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے جنگ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان میں ٹاسک فورس سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے چیئرمین ڈاکٹر عطاء الرحمٰن نے کہا کہ کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد کہیں زیادہ ہے حالات کو بگڑتے ہوئے دیکھ رہا ہوں۔ اس نے کہا کہ کورونا وائرس کے مریضوں کا جو ڈیٹا آ رہا ہے وہ صحیح عکاسی نہیں کر رہا، مریضوں کی اصل تعداد زیادہ ہے۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے چیئرمین ٹاسک فورس سائنس اینڈ ٹیکنالوجی ڈاکٹر عطاء الرحمٰن نے کہا کہ کورونا وائرس کے زیادہ سے زیادہ ٹیسٹ کیے جائیں۔ انہوں نے بتایا کہ کچھ ڈرگس کا اگلے ہفتے سے جاوید اکرم کی نگرانی میں کلینیکل ٹرائل شروع کر دیا جائے گا، پاکستان میں کورونا کی ساخت سے متعلق 10 روز میں اندازہ ہو جائے گا۔

ڈاکٹر عطاء الرحمٰن نے کہا کہ کورونا پر اگر قابو پانا ہے تو زیادہ سے زیادہ ٹیسٹ کرنے ہوں گے، یہ مرض آگ کی طرح پھیل رہا ہے، امریکہ جیسے ملک نے اس کے آگے گھٹنے ٹیک دیے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ جو لوگ بغیر کسی مقصد کے گھروں سے باہر نکل رہے ہیں انہیں جیلوں میں ڈالنا ہو گا، سخت اقدامات نہیں کیے گئے تو معاملہ خراب ہو سکتا ہے۔

News Code 1898976

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 7 + 3 =