برطانیہ میں معروف ڈاکٹر کورونا وائرس سے جاں بحق

برطانیہ میں 76 سالہ ڈاکٹر حبیب زیدی ایک ہفتے سے آئسولیشن میں تھے وہ اپنے فرائض کی انجام دہی کے دوران مہلک کورونا وائرس میں مبتلا ہوگئے تھے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے جنگ  کے حوالے سے نقل کیاہے کہ برطانیہ میں 76 سالہ ڈاکٹر حبیب زیدی ایک ہفتے سے آئسولیشن میں تھے وہ اپنے فرائض کی انجام دہی کے دوران مہلک کورونا وائرس میں مبتلا ہوگئے تھے۔ اطلاعات کے مطابق کورونا وائرس سے متاثر نامور برٹش پاکستانی ڈاکٹر حبیب زیدی سائوتھ اینڈ ہپستال کے انٹینسیو کیئر میں 24 گھنٹے گزارنے کے بعد زندگی کی بازی ہار گئے۔  وہ کورونا وائرس کا شکار ہونے والے پہلے برطانوی ڈاکٹر ہیں۔ ان کی بیٹی ڈاکٹر سارہ زیدی کے مطابق انہیں بطور ڈاکٹر اپنے فرائض کی انجام دہی کے دوران مہلک کورونا وائرس لگا تھا اور اس وائرس نے ان کی زندگی لے لی، جو ان کی قربانی کی عکاس ہے اور اس سے ان کی خدمت کا پیشہ ورانہ رویہ نمایاں ہوتا ہے۔

 ان کا حتمی کیس کے طور پر علاج کیا گیا تھا کیونکہ ان میں کورونا وائرس ہونے کا کلینیکل شبہ کم تھا اور ٹیسٹ رزلٹ اکیڈمک تھا۔ 76 سالہ ڈاکٹر حبیب زیدی ایک ہفتے سے آئسولیشن میں تھے اور وہ مریضوں کو نہیں دیکھ رہے تھے، کیونکہ وائرس کی علامت ظاہر ہونے کے بعد انہیں کورونا وائرس میں مبتلا ہونے کا شبہ ہو گیاتھا۔ اگر ٹیسٹ کے رزلٹ مثبت آئے تو ڈاکٹر زیدی مہلک کوویڈ 19 کا شکار ہونے والے پہلے برطانوی ڈاکٹر ہوں گے۔ عوامی اجتماع پر پابندی ہونے کی وجہ سے فیملی اور فرینڈز ڈاکٹر زیدی کی مناسب تدفین نہیں کر سکے۔ ڈاکٹر سارہ نے کہا کہ ہم معمول کے مطابق سوگ نہیں منا سکے اور نہ معمول کے مطابق تدفین کر سکے۔ ان کی موت نے ہماری زندگی میں خلا پیدا کر دیا ہے۔ 

News Code 1898957

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 4 =