اسرائیل میں مذہبی پیشواؤں کا حکومت ہدایات ماننے سے انکار

اسرائیل میں قدامت پسند مذہبی پیشواؤں نے کورونا وائرس کی روک تھام کے سلسلے میں غاصب صہیونی حکومت ہدایات ماننے اور درسگاہیں بند کرنے سے انکار کردیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے غیر ملکی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ اسرائیل میں قدامت پسند مذہبی پیشواؤں نے کورونا وائرس کی روک تھام کے سلسلے میں غاصب صہیونی حکومت ہدایات ماننے اور درسگاہیں بند کرنے سے انکار کردیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق اسرائیل نے گزشتہ ہفتے تمام ملک میں اسکولوں اور جامعات کی بندش کا حکم دیا تھا تاکہ وائرس کے پھیلاؤ کو روکا جا سکے اور ملک کے اکثر علاقوں میں اس حکم کی تعمیل کی گئی لیکن قدامت پسند یہودیوں کے علاقے ہریدی میں اب بھی کچھ تعلیمی ادارے کھلے ہوئے ہیں۔یہودیوں کے مذہب پیشواؤں 'ربی' نے رواں ہفتے کے اوائل میں حکومت کے احکامات کو ماننے سے انکار کرتے ہوئے اپنے اسکول اور درسگاہیں کھلے رکھنے کا اعلان کیا تھا۔

رواں ہفتے اس بات کے شواہد ملیں ہیں کہ ہریدی کے گرد و نواح میں وائرس انتہائی تیزی سے پھیل رہا ہے اور ہر چار میں سے ایک شہری کو گھر تک محدود رہنے کی ہدایت کی گئی ہے البتہ اس کے باوجود انتہا پسند ربی اپنے موقف پر قائم ہیں۔ واضح رہے کہ اسرائیل بھی دنیا کے دیگر ملکوں کی طرح وائرس کی زد میں ہیں جہاں گزشتہ 24گھنٹوں 100 سے زائد کیسز رپورٹ ہونے کے سبب متاثرہ افراد کی تعداد 529ہو گئی ہے جن میں سے 10 کی حالت نازک ہے۔

News Code 1898737

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • captcha