پاکستان کے شہر راولپنڈی میں8 قرنطینہ  سینٹرز قائم

پاکستان کے صوبہ پنجاب کی حکومت نے کورونا وائرس کی روک تھام اور علاج کے سلسلے میں راولپنڈی میں8 قرنطینہ سینٹرز قائم کردیئے ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے پاکستانی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان کے صوبہ پنجاب کی حکومت نے کورونا وائرس کی روک تھام اور علاج کے سلسلے میں راولپنڈی میں8 قرنطینہ  سینٹرز قائم کردیئے ہیں۔قرنطینہ سینٹرزمجموعی طور پر 190 سے زائد کمروں اور 10ہالز پر مشتمل نجی کیڈٹ کالجز، ہاسٹلز، اور نجی و سرکاری سکولوں میں قائم کیے گئے ہیں جہاں مطلوبہ سہولیات بھی فراہم کردی گیں ہیں۔ کورونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے متاثرہ و مشتبہ مریضوں کو ایس او پی کے مطابق الگ تھلگ  رکھ کر طبی امداد  دینے و تشخیص کے لیے راولپنڈی میں بھی اقدمات اٹھائے گئے ہیں۔ جس کے  تحت راولپنڈی اور تمام تحصیلوں میں 8 قرنطینہ سینٹرز قائم کردیئے گئے۔

قرنطینہ سینٹرزسرکاری و پرائیویٹ تعلیمی اداروں  و نجی کیڈٹ کالجز میں قائم کیے گئے ہیں۔ موٹر وے سے راولپنڈی کو ملانے والے چکری کے مقام  پر 55 کمروں کے کیڈٹ کالج چکری، راولپنڈی میں بھی  30 کمروں اور 10 ہالزپر مشتمل نجی کیڈٹ کالج، ٹیکسلا میں 68 کمروں کے سرکاری ہاسٹل، کہوٹہ میں 20 کمروں کے گورنمنٹ ہائی اسکول فار بوائز، کلر سیداں میں 7کمروں کے بوائز کالج، کوٹلی ستیاں میں 14 کمروں پر مشتمل اسکول، مری میں 12 کمروں پر مشتمل گورنمنٹ گرلز ہائی اسکول  گھوڑا گلی میں قرنطینہ سینٹرز قائم  کیے گئے ہیں۔

اس حوالے سے تمام سینٹرز میں بجلی گیس اور پینے و استعمال والے پانی  کی فراہمی بھی یقینی بنائی گئی  ہے۔  ذرائع کے مطابق ڈیکلیئر کیے گئے قرنطینہ سینٹرز کی بلڈنگ کی مجموعی کیپسٹی 1300 افراد کی  ہے اور عمارتوں میں واش رومز کا بھی خیال رکھا  گیا ہے۔

News Code 1898668

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 9 + 6 =