پاکستان نے تفتان بارڈر پر 4 ہزار زائرین کو بغیر ٹیسٹ کے قرنطینہ میں رکھ دیا

پاکستان نے ایران سے آنے والے زائرین کو بغیر کسی طبی ٹیسٹ کے قرنطین میں رکھ دیا ہے زائرین کی تعداد 4 ہزار تک پہنچ گئی ہے تفتان بارڈر پر زائرین کو شدید مشکلات کا سامنا ہے زائرین کے ہمارہ خواتین اور بچوں کی بھی بڑی تعداد موجود ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایکس پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان نے ایران سے آنے والے زائرین کو بغیر کسی طبی ٹیسٹ کے قرنطین میں رکھ دیا ہے زائرین کی تعداد 4 ہزار تک پہنچ گئی ہے تفتان بارڈر پر زائرین کو شدید مشکلات کا سامنا ہے زائرین کے ہمارہ خواتین اور بچوں کی بھی بڑی تعداد موجود ہے۔ اطلاعات کے مطابق ایران سے زائرین کی آمد کا سلسلہ جاری ہے جس کے بعد تفتان بارڈر پر قرنطینہ میں رکھے گئے زائرین کی تعداد 4 ہزار تک پہنچ گئی ہے۔ تفتان انتظامیہ کے مطابق ایران سے مزید 184 پاکستانی تفتان پہنچ گئے ہیں جس کے بعد تفتان بارڈر پر قرنطینہ میں رکھے گئے زائرین کی تعداد 4 ہزار تک پہنچ گئی ہے جن میں مرد، خواتین اور بچے شامل ہیں۔ تفتان بارڈر پر زائرین کو 4 قرنطینہ میں رکھا گیا ہے۔ محکمہ صحت کے مطابق کورونا وائرس کے شبہ میں ٹیسٹ کے لئے موبائل لیب بھی تفتان پہنچنے والی ہےجس کو ایک مخصوص جگہ پر منتقل کیا گیا ہے۔ زائرین کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

News Code 1898508

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 0 =