دہلی میں ایرانی سفیر بھارتی وزارت خارجہ میں طلب

بھارتی مسلمانوں کی حمایت میں ایرانی وزير خارجہ محمد جواد ظریف کے بیان پربھارتی حکومت نے شدید رد عمل ظاہر کرتے ہوئے دہلی میں ایرانی سفیر کو وزارت خارجہ میں طلب کرکے شدید اعتراض کیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے اسپوٹنک کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ بھارتی مسلمانوں کی حمایت میں ایرانی وزير خارجہ محمد جواد ظریف کے بیان پربھارتی حکومت نے شدید رد عمل ظاہر کرتے ہوئے دہلی میں ایرانی سفیر کو وزارت خارجہ میں طلب کرکے شدید اعتراض کیا ہے۔ اسلامی جمہوریہ کے وزير خارجہ محمد جواد ظریف نے کل سماجی سائٹ پر اپنے ایک بیان میں ہندوستان میں منظم منصوبہ کے تحت مسلمانوں کے قتل عام اور ان کے خلاف ہونے والے وحشیانہ تشدد کی بھر پور الفاظ میں مذمت کی اور متاثرہ خاندانوں کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کیا تھا۔

ایرانی وزیر خارجہ نے ایران اور ہندوستان کے دیرینہ اور دوستانہ تعلقات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے بھارتی حکومت پر زوردیا تھا کہ وہ مسلمانوں کے خلاف تشدد کی لہر اور قتل عام کی روک تھام کرے،  ان کے اموال ، مقدس مقامات اور تمام بھارتی شہریوں کے تحفظ کو یقینی بنائے۔ ایرانی وزير خارجہ کے اس بیان پر بھارتی حکومت نے دہلی میں ایرانی سفیر کو طلب کرکے شدید اعتراض کیا ہے۔ ذرائع کے مطابق تہران میں آج بھارتی سفارتخانہ کے سامنے مظاہرہ بھی کیا جائےگا۔ ایرانی حکام اور عوام میں بھارت میں مسلمانوں کے سفاکانہ اور مجرمانہ قتل عام پر شدید غم و غصہ پایا جاتا ہے۔ایرانی عوام کے مختلف حلقوں نے بھارتی مسلمانوں کا بھر پور ساتھ دینے کا اعلان کیا ہے۔

News Code 1898299

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 15 =