افغان امن معاہدے کو امیرکی صدر ٹرمپ سے خطرہ ہے

افغان امور کے ماہر تجزیہ کار اور صحافی رحیم اللّٰہ یوسفزئی نے خبردار کیا ہے کہ افغان طالبان اور امریکہ کے درمیان ہونے والے امن معاہدے کو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ہی خطرہ ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے جیو نیوز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ افغان امور کے ماہر تجزیہ کار اور صحافی رحیم اللّٰہ یوسفزئی نے خبردار کیا ہے کہ افغان طالبان اور امریکہ کے درمیان ہونے والے امن معاہدے کو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ہی خطرہ ہے۔  جیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے رحیم اللّٰہ یوسفزئی نے کہا کہ  امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ امریکہ کے حالات کے مطابق اس معاہدے کو ختم بھی کر سکتے ہیں۔ سینئر صحافی کا یہ بھی کہنا تھا کہ ڈونلڈ ٹرمپ سے کوئی بھی توقع کی جاسکتی ہے۔  انہوں نے کہا کہ افغان سیاسی بحران کی وجہ سے معاہدہ آگے بڑھانے میں مشکل ہوسکتی ہے۔

واضح رہے کہ آج قطر کے دارالحکومت دوحہ میں امریکہ اور افغان طالبان کے درمیان مشروط امن معاہدے پر دستخط ہوگئے ہیں۔ طالبان کے نمائندے ملا برادر عبدالغنی اور امریکی نمائندے زلمے خلکل زاد نے دستخط کئے ہیں جبکہ طالبان کو اس معاہدے پر امریکی صدر یا امریکی وزير خآرجہ کے دستخط کی توقع تھی لیکن ایسا نہیں ہوا اور معاہدے پرامریکہ کی طرف سے  زلمے خلیل زآد نے دستخط کئے ہیں ۔ زلمے خلیل زاد افغان نژاد امریکی شہری ہیں۔

News Code 1898239

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 13 =