بھارتی وزیر داخلہ کے استعفی کا مطالبہ/ امیت شاہ مسلمانوں کے قتل عام میں ملوث

بھارتی اپوزیشن جماعت کانگریس کی رہنما سونیا گاندھی نے بھارتی وزیر داخلہ امیت شاہ کو دہلی کے مسلم کش فسادات میں ملوث قراردیتے ہوئےکہا ہے کہ امیت شاہ کو عہدے سے مستعفی ہوجانا چاہیے اور اسکے خلاف قتل کا مقدمہ درج ہونا چاہیے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے بھارتی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ بھارتی اپوزیشن جماعت کانگریس کی رہنما سونیا گاندھی نے بھارتی وزیر داخلہ امیت شاہ کو دہلی کے مسلم کش فسادات میں ملوث قراردیتے ہوئےکہا ہے کہ امیت شاہ کو عہدے سے مستعفی ہوجانا چاہیے اور اسکے خلاف قتل کا مقدمہ درج ہونا چاہیے۔ سونیا گاندھی نے میڈیا سے گفتگو کے دوران دہلی کی کشیدہ صورتحال پر بھارتی وزیر داخلہ امیت شاہ کے استعفیٰ کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ صورتحال قابو میں کرنے کے لیے اضافی نفری تعینات کی جائے۔ سونیا گاندھی نے اپنی پریس کانفرنس کے دوران مودی حکومت پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ دہلی میں حالات بے قابو ہونے پر پیرا ملٹری فورس کیوں نہیں بلائی گئی؟ انہوں نے مزید کہا کہ دہلی کی کشیدگی پہلے سے طے شدہ منصوبہ کا نتیجہ ہے، بی جے پی رہنما معاشرے میں نفرت انگیز بیانات پھیلا رہے ہیں۔سونیا گاندھی کا مزید کہا تھا کہ وزیر اعلیٰ اروند کیجری وال دہلی کے متاثرہ علاقوں میں جائیں، دہلی کی صورتحال پر فوری ایکشن کی ضرورت ہے۔ واضح رہے کہ دہلی پولیس اور آر ایس ایس کے ہندو دہشت گردوں نے امریکی صدر ٹرمپ کے دورہ دہلی کے دوران 20 سے زائد مسلمانوں کو شہید اور بڑے پیمانے پر مسلمانوں کے گھروں، تجارتی و مذہبی مراکز اور گاڑیوں کو جلادیا ہے۔ ادھر پاکستان نے بھی دہلی کو ہولناک اور بھیانک واقعات پر وزیر اعظم نریندر مودی کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ مودی نے بھارت کا سیاہ اور مکروہ چہرہ دنیا کے سامنے مزید نمایاں کردیا ہے۔

News Code 1898154

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 4 =