سعودی عرب کی کشمیر معاملے پراو آئی سی کے وزراء خارجہ کا اجلاس بلانے میں رکاوٹ ڈالنے کی کوشش

اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کے کونسل برائے خارجہ (سی ایف ایم) کی تیاری کے لیے جہاں سینئر حکام کا اجلاس 9 فروری سے شروع ہورہا ہے وہیں سفارتی ذرائع کا کہنا ہے کہ سعودی عرب، کشمیر کے معاملے پر او آئی سی کے وزراء خارجہ کا اجلاس بلانے کی پاکستان کی درخواست قبول کرنے سے انکار کررہا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ڈان کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کے کونسل برائے وزرائے خارجہ (سی ایف ایم) کی تیاری کے لیے جہاں سینئر حکام کا اجلاس 9 فروری سے شروع ہورہا ہے وہیں سفارتی ذرائع کا کہنا ہے کہ سعودی عرب، کشمیر کے معاملے پر او آئی سی کے وزراء  خارجہ کا اجلاس بلانے کی پاکستان کی درخواست قبول کرنے سے انکار کررہا ہے۔ اطلاعات کے مطابق او آئی سی کی جانب سے اجلاس طلب نہ کیے جانے پر پاکستان کی تشویش میں اضافہ ہورہا ہے۔وزیر اعظم عمران خان نے بھی ملائیشیا کے دورے کے دوران تھنک ٹینک سے خطاب کرتے ہوئے کشمیر کے مسئلے پر او آئی سی کی خاموشی پر مایوسی کا اظہار کیا تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ 'اس کی وجہ یہ ہے کہ ہماری کوئی آواز نہیں ہے اور ہم تقسیم ہوچکے ہیں، ہم کشمیر کے مسئلے پر او آئی سی میں ہم آواز بھی نہیں ہوسکتے۔

واضح رہے کہ پاکستان اقوام متحدہ کے بعد دوسرے بڑے عالمی فورم، مسلم ممالک کے 57 رکنی بلاک میں گزشتہ سال اگست کے مہینے میں بھارت کے کشمیر سے الحاق کے بعد سے وزرائےخارجہ کا اجلاس طلب کرنے کے لیے کوششیں کر رہا ہے لیکن سعودی عرب ، پاکستان کی اس کوشش کو ناکام بنا رہا ہے۔

News Code 1897621

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 8 + 0 =