دہلی میں جامعہ ملیہ کے قریب فائرنگ کاتیسرا واقعہ پیش آیا

بھارت کے دارالحکومت دہلی سمیت مختلف شہروں میں متنازع شہریت قانون کے خلاف احتجاج جاری ہے اور جامعہ ملیہ کے گیٹ نمبر 5 کے قریب ایک بار پھر فائرنگ کا واقعہ پیش آیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے بھارتی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ بھارت کے دارالحکومت دہلی سمیت مختلف شہروں میں متنازع شہریت قانون کے خلاف احتجاج جاری ہے اور جامعہ ملیہ کے گیٹ نمبر 5 کے قریب ایک بار پھر فائرنگ کا واقعہ پیش آیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق  شاہین باغ کےمظاہرین نے درپیش خطرہ کے تحت وزارت داخلہ، ہیومن رائٹس کمیشن اور پولیس کو خط لکھ دیا۔ ذرائع ابلاغ  کے مطابق جامعہ میں بیٹھے مظاہرین کے قریب فائرنگ اسکوٹی پر سوار دو نامعلوم افراد نے کی، فائرنگ کے واقعہ کے بعد احتجاجی طلبا پولیس اسٹیشن پہنچ گئے، جس کے بعد واقعے کی ایف آئی آردرج کرلی گئی ہے۔ ادھر شاہین باغ کےمظاہرین نے وزارت داخلہ، ہیومن رائٹس کمیشن، پولیس کوخط میں لکھا ہے کہ انہیں درپیش خطرہ حقیقی ہے ، انہیں طاقتور پوزیشن پر موجود افراد کھلے عام دھمکیاں دے رہے ہیں، پرامن مظاہرین کی حفاظت کیلئے یقینی اقدامات کئے جائیں۔واضح رہے کہ گزشتہ 4 روز میں جامعہ ملیہ کے پاس فائرنگ کا یہ تیسرا واقعہ ہے، وہاں کے طالب علم شہریت کے متنازع قانون کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں۔ ادھر دہلی کی آپ پارٹی کے ایک رہنما نے بھارتی وزير داخلہ امیت شاہ کے استعفی کا مطالبہ کرتے وہئے کہا ہے کہ امیت شاہ بھارتی تاریخ کے سب سے ناکارہ وزير داخلہ ثابت ہوئے ہیں۔

News Code 1897543

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 7 + 10 =