سعودیہ کے عدم تعاون کی وجہ سے ایرانی وفد کا جدہ میں او آئی سی کے اجلاس میں شرکت کا پروگرام منسوخ

اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ ایرانی وفد نے سعودی عرب کے عدم تعاون، ویزا صادر نہ کرنے، اورایران کے خلاف معاندانہ پالیسی کی بنا پر صدی ڈیل کے بارے میں جدہ میں ہونے والے اجلاس میں شرکت کا پروگرام منسوخ کردیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان سید عباس موسوی نے کہا ہے کہ سعودی عرب کے عدم تعاون، ویزا صادر نہ کرنے اورایران کے خلاف معاندانہ پالیسی کی بنا پر صدی ڈیل کے بارے میں جدہ میں ہونے والے اجلاس میں ایرانی وفد نے شرکت کا پروگرام منسوخ کردیا ہے۔

عباس موسوی نے کہا کہ کل رات سعودی عرب کی طرف سے پیغام آیا تھا کہ وہ ویزا صادر کرنے کے لئے تیار ہے لیکن ویزا میں تاخير کی وجہ سے ایرانی وفد عملی  طور پر جدہ اجلاس میں شرکت نہیں کرسکتا تھا لہذا ایران نے جدہ میں او آئی سی کے اجلاس میں شرکت کا فیصلہ منسوخ کردیا ہے۔

ایرانی وزارت خارجہ ترجمان نے کہا کہ جدہ میں امریکی صدر کی فلسطین کے بارے میں صدی ڈیل کا جائزہ لینے کے سلسلے میں اسلامی تعاون تنظیم  کا اجلاس منعقد ہورہا ہے اور اس اجلاس میں سعودی عرب نے ایرانی وفد کو وقت پر ویزا صادر نہیں کیا اور وہ ایرانی وفد کی شرکت میں رکاوٹ ڈال رہا تھا۔ سید عباس موسوی نے کہا کہ سعودی عرب نے ثابت کردیا ہے کہ وہ اسلامی تعاون تنظیم کے اجلاس کی میزبانی کرنے کی لیاقت اور صلاحیت کھوچکا ہے سعودی عرب کی امریکہ اور اسرائیل نواز پالیسیوں سے مسئلہ فلسطین کو بہت بڑا نقصان پہنچ چکا ہے اور آج بھی سعودی عرب امریکہ اور اسرائیل کے نقش قدم پر چل رہا ہے۔ انھوں نے کہا کہ بعض اسلامی ممالک نے سعودی عرب کے اس اقدام کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی عرب او آئی سی ک میزبانی سے سیاسی مقاصد کے لئے استفادہ کررہا ہے۔

News Code 1897533

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 7 + 1 =