پاکستان میں کورونا وائرس کی تشخیص کی طبی سہولت فراہم نہیں

چین میں26 لوگوں کی جان لینے والے کورونا وائرس کی پاکستان میں تشخیص کی سہولت موجود ہی نہیں ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے جنگ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ چین میں26 لوگوں کی جان لینے والے کورونا وائرس کی پاکستان میں تشخیص کی سہولت موجود ہی نہیں ہے۔ جس پر وفاقی حکومت نے چین، ہانگ کانگ اور ہالینڈ میں قائم تین لیبارٹریوں سے ملک میں آنے والے مشتبہ کیسز کی تشخیص کے لیے رابطہ کیا ہے۔ وائرس سے بچاؤ کیلئے ڈبلیو ایچ او اور وزارت صحت نے بیرون ملک جانیوالے پاکستانیوں کیلئے احتیاطی تدابیر جاری کر دی ہیں، کورونا سے متاثرہ ممالک جانیوالے افراد خصوصی احتیاط برتیں، بیرون ملک جانیوالےافراد ہاتھ باقاعدگی سے صابن سے دھوئیں۔  ڈبلیو ایچ او نے کہا کہ کھانسی، چھینک آنے پر ناک، منہ کو ٹشو سے ڈھانپیں، بیرون ملک جانیوالے افراد سردی، فلو کے شکار مریضوں سے دور رہیں۔ وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے قومی صحت ڈاکٹرظفر مرزا نے کہا ہے کہ قومی وزارتِ صحت کورونا وائرس کے مشتبہ کیسز کے نمونے 3 ممالک کی لیبارٹریز کو بھیجے گی، اس وائرس کی تشخیص مخصوص وائرولوجی لیبارٹریز کے ہی پاس ہے۔

News Code 1897299

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 1 =