میکرون کی اسرائیلی سیکورٹی اہلکاروں پر شدید برہمی

فرانسیسی صدر ایمانیول میکرون اسرائیل کے دورے پر ہیں جہاں اس نے چرچ کے دورے کے دوران فرانسیسی اہلکاروں کے ساتھ اسرائیلی سکیورٹی اہلکاروں کو دیکھ کرسخت برہمی کا اظہار کیا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے فرانسیسی خبررساں ایجنسی کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ فرانسیسی صدر ایمانیول میکرون اسرائیل  کے دورے پر ہیں جہاں اس نے چرچ کے دورے کے دوران فرانسیسی اہلکاروں کے ساتھ اسرائیلی سکیورٹی اہلکاروں کو دیکھ کرسخت برہمی کا اظہار کیا۔فرانسیسی صدر میکرون نے انگریزی میں ڈانٹتے ہوئے اسرائیلی سکیورٹی اہلکار سے کہا کہ " باہر جاؤ" جو تم نے میرے سامنے کیا وہ بالکل پسند نہیں آیا۔ سب کو رولز معلوم ہیں ناں؟ یہ قواعد صدیوں سے ہیں، میرے ساتھ فرانسیسی اہلکار ہی رہیں گے، قانون کا احترام کریں۔ فرانسیسی صدر نے مقبوضہ بیت المقدس میں مسجد الاقصیٰ کا بھی دورہ کیا۔ واضح رہے کہ مقبوضہ بیت المقدس کا چرچ آف سینٹ این فرانس کی ملکیت ہے، 1967ء میں یہاں اسرائیلی قبضہ کو بھی فرانس اشتعال انگیزی سمجھتا ہے، سلطنت عثمانیہ نے 1856ء میں اس چرچ کو فرانسیسی شہنشاہ نپولین سوئم کو بطور تحفہ دیا تھا۔

اس سے قبل 1996ء میں اس وقت کے فرانسیسی صدر شیراک نے بھی اس چرچ کے دورے پر اسرائیلی اہلکاروں کی اس حرکت پر غصہ ہو کر اپنے جہاز پر جانے کی دھمکی دے دی تھی۔ انہوں نے کہا تھا کہ اسرائیلی سکیورٹی اہلکار کے جانے تک چرچ کے اندر نہیں جاؤں گا۔

News Code 1897248

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 9 + 2 =