ایران کی یورپی ممالک کی غیر منصفانہ رفتارپر ایٹمی ایجنسی کے ساتھ تعاون پر نظر ثانی کی دھمکی

اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کے اسپیکر علی لاریجانی نے یورپی ممالک کی غیر منصفانہ رفتارپر مشترکہ ایٹمی معاہدے کی شق 37 کے مطابق ایٹمی ایجنسی کے ساتھ تعاون پر نظر ثانی کرنے کی دھمکی دی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کے نامہ نگار کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کے اسپیکر علی لاریجانی نے یورپی ممالک کی غیر منصفانہ رفتارپر مشترکہ ایٹمی معاہدے کی شق 37 کے مطابق ایٹمی ایجنسی کے ساتھ تعاون پر نظر ثانی کرنے کی دھمکی دی ہے۔

لاریجانی نے شہید میجر جنرل سلیمانی کی امریکہ کے بزدلانہ ہوائی حملے میں مظلومانہ شہادت اور سپاہ اسلام کے عظیم کمانڈر کے ساتھ قوم کی محبت اور عشق کے تاریخی جلوے اس بات کامظہر ہیں کہ قوم اسلام اور انقلاب کی حمایت میں شہیدوں کے راستہ پرگامزن ہے۔

اسپیکر علی لاریجانی نے کہا کہ شہید سلیمانی کی شہادت کے بعد امریکہ کا اصل اور بھیانک چہرہ دنیا کے سامنے مزید نمایاں ہوگیا ہے اور خطے میں امریکی فوج کی موجودگی علاقائی اقوام کے لئے بہت بڑا خطرہ ہے۔ انھوں نے کہا کہ امریکہ مسلسل بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزیاں کرکے دنیا پر جنگل کی حکمرانی مسلط کرنے کی کوشش کررہا ہے۔ لاریجانی نے ایرانی قوم کی بیداری اور رہبر معظم انقلاب اسلامی کے حکیمانہ بیانات کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ایرانی قوم کا اللہ تعالی کی امداد اور نصرت پر یقین ہے جبکہ بعض عرب حکومتیں امریکہ کی طاقت پر ناز کررہی ہیں۔ انھوں نے کہا کہ بعض عرب ممالک امیرکہ کے ساتھ ملکر خطے کے امن و اماں کو تباہ کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ لاریجانی نے مشترکہ ایٹمی معاہدے میں شریک تین یورپی ممالک فرانس ، جرمنی اور برطانیہ کی روش کو غیر ذمہ دارانہ اور غیر منصفانہ قراردیتے ہوئے کہا کہ ایران مشترکہ ایٹمی معاہدے کی شق 37 کی روشنی میں بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی کے ساتھ تعاون پر نظر ثانی کرسکتا ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہم یورپی ممالک کی منہ زوری کا مقابلہ کرنے کے لئۓ آمادہ ہیں یورپی یونین مشترکہ ایٹمی معاہدے میں کئۓ گئے اپنے وعدوں پر عمل کرنے کے بجائے صرف ایران کو نصیحتیں کررہے ہیں جبکہ معاہدے پر عمل ایران کے لئے نہیں بلکہ فریقین کے لئے ضروری ہے۔

News Code 1897138

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 3 =