امریکی ايئر بیس پر ایران کے میزائل حملوں پر سعودی عرب کا شدید برہمی کا اظہار

سعودی عرب نے عراق میں عین الاسد میں امریکی ايئر بیس پر ایران کے دفاعی میزائل حملوں پر امریکہ کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے ایران کے حملے کی مذمت کی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے العربیہ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ سعودی عرب نے عراق میں عین الاسد میں امریکی ايئر بیس پر ایران کے دفاعی میزائل حملوں پر امریکہ کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے ایران کے حملے کی مذمت کی ہے۔ سعودی عرب کی سرکاری خبررساں ایجنسی ایس پی اے کے مطابق سعودی عرب کی وزارتِ خارجہ نے عراق میں ایران کے میزائل حملوں کے بعد ایک مرتبہ پھر ضبط وتحمل کی ضرورت پر زوردیا ہے۔ العربیہ کے مطابق سعودی وزارت خارجہ نےاپنے بیان میں کہا ہے کہ " سعودی عرب کے فریم ورک کے تحت عراق میں رونما ہونے والے واقعات کے بعد بیانات جاری کیے گئے تھے۔سعودی عرب نے عراق میں داعش کی تربیت کرنے والی بین الاقوامی اتحادی فورسز کے دو فوجی اڈوں پر حملوں اور عراق کی خود مختاری کی خلاف ورزی پر ایران کی مذمت کی ہے" ۔ عرب ذرائع کے مطابق سعودی عرب کے بادشاہ شاہ سلمان اس دور کے بڑے شیطان اور بڑے یزید کے زبردست حامی ہیں لیکن انھیں اس دور کے بڑے شیطان اور بڑے یزید کی حمایت کچھ کام نہیں آئےگی،  اور اللہ تعالی اپنے وعدے کے مطابق سعودی عرب کے بادشاہ  شاہ سلمان اور ولیعہد محمد بن سلمان کو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ساتھ محشور کرےگا کیونکہ سعودی عرب دنیا بھر میں ہونے والے امریکہ اور اسرائیل کے وحشیانہ اور مجرمانہ جرائم میں برابر کا شریک ہے۔ عرب ذرائع کے مطابق سعودی عرب کا بادشاہ مسلمانوں کے بجائے یہودیوں سے زیادہ قریب ہے اور وہ خطے میں امریکہ اور اسرائیل کی پالیسیوں کا اصلی محافظ ہے۔

News Code 1896915

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 11 =