عراقی صدر سے سعودی عرب کے امریکہ نواز بادشاہ کی ٹیلیفون پر گفتگو

عراق، شام،لیبیا ، یمن، افغانستان اور دیگر مسلم ممالک میں عدم استحکام، دہشت گردی اور بد امنی پھیلانے والے سعودی عرب کے امریکہ نوازبادشاہ شاہ سلمان نے عراق کے صدر برہم صالح کے ساتھ ٹیلیفون پرگفتگو اور تبادلہ خیال کیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے النشرہ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ عراق، شام،لیبیا ، یمن، افغانستان اور دیگر مسلم ممالک میں عدم استحکام، دہشت گردی اور بد امنی پھیلانے والے سعودی عرب کے امریکہ نوازبادشاہ شاہ سلمان نے عراق کے صدر برہم صالح کے ساتھ ٹیلیفون پرگفتگو اور تبادلہ خیال کیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق سعودی عرب کے خونخوار بادشاہ شاہ سلمان نے عراقی صدر برہم صالح کے ساتھ گفتگو میں خطے میں جاری کشیدگی کو ختم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ عراق میں بد امنی اور دہشت گردی پھیلانے والے سعودی شاہ سلمان نے عراق کی سلامتی اور استحکام کی خواہش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ خطے میں تناؤ کو کم کرنے کے لئے تمام اقدامات اٹھائے جائیں۔ ادھر سعودی عرب کے ولیعہد محمد بن سلمان نے بھی عراق کے وزیر اعظم عادل عبدالمہدی کے ساتھ گفتگو میں دوطرفہ تعلقات کو فروغ دینے کے بارے میں تبادلہ خیال کیا ہے۔ ذرائع کے مطابق سعودی عرب کی شام ، عراق، لیبیا، افغانستان ، یمن ، لبنان اور پاکستان میں مداخلت کا سلسلہ جاری ہے سعودی عرب کے بادشاہ نے پاکستان کے امور میں مداخلت کرتے ہوئے پاکستانی وزير اعظم عمران خان کو ملائشیا میں ہونے والے اسلامی اجلاس میں شرکت کرنے سے روک دیا تھا ۔

News Code 1896765

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 10 =