بلیک واٹر کے سربراہ کو ونزوئلا کا دورہ کرنے پر مشکل کا سامنا

امریکہ کی دہشت گرد اور بدنام زمانہ تنظیم بلیک واٹر کے سربراہ ایرک پرنس کو ونزوئلا کا دورہ کرنے پر مشکل کا سامنا ہوسکتا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایسوسی ایٹڈ پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکہ کی دہشت گرد اور بدنام زمانہ تنظیم بلیک واٹر کے سربراہ ایرک پرنس کو ونزوئلا کا دورہ کرنے پر مشکل کا سامنا ہوسکتا ہے۔ اطلاعات کے مطابق ایرک پرنس نے حال ہی میں ونزوئلا کا دورہ کیا جہاں اس نے صدر نکولس میڈورو کی حکومت کے اعلیٰ عہدیدار سے ملاقات کی۔ امریکہ کی طرف سے ونزوئلا پر پابندیاں عائد کی گئی ہیں اور ایرک پرنس کی اس ملاقات کو ان پابندیوں کی خلاف ورزی قراردیا گیا ہے جس پر اس کے خلاف تحقیقات شروع کر دی گئی ہیں۔ رپورٹ کے مطابق تحقیقات کے لیے ایرک پرنس کو امریکہ ٹریژری ڈیپارٹمنٹ کو ریفر کر دیا گیا جس کے حکام تعین کریں گے کہ ایرک پرنس کی اس ملاقات سے امریکی پابندیوں کی خلاف ورزی ہوئی ہے یا نہیں۔ دو سینئر امریکی حکام کا کہنا تھا کہ " تاحال اس حوالے سے کچھ نہیں کہا جا سکتا کہ ایرک پرنس پر بھی پابندیاں عائد ہوتی ہیں یا نہیں۔ اس کا فیصلہ ٹریژری ڈیپارٹمنٹ کی تحقیقات کے بعد ہو گا " ۔واضح رہے کہ ایرک پرنس امریکی ری پبلکن پارٹی اور صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے بڑے ڈونر ہیں اور ان کی بہن بیسٹی ڈیووس اس وقت ڈونلڈٹرمپ کی حکومت میں امریکہ کی وزیرتعلیم کے منصب پر فائز ہیں۔ ذرائع کے مطابق ایرک پرنس کا ونزوئلا کاد ورہ امریکہ کے لئے نہیں بلکہ ونزوئلا کے لئے خطرناک ثابت ہوسکتا ہے۔

News Code 1896712

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 9 =