سوڈان میں ایک استاد کی  زیر حراست ہلاکت پر کے 27 اہل کاروں کو پھانسی کی سزا

سوڈان میں احتجاجی مظاہروں کے دوران ایک استاد کی گرفتاری اور زیر حراست ہلاکت پر خفیہ ادارے کے 27 اہل کاروں کو پھانسی کی سزا سنادی گئی۔

مہر خبررساں ایجنسی نے بین الاقوامی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ سوڈان میں احتجاجی مظاہروں کے دوران ایک استاد کی گرفتاری اور زیر حراست ہلاکت پر خفیہ ادارے کے 27 اہل کاروں کو پھانسی کی سزا سنادی گئی۔ اطلاعات کے مطابق سوڈان کی ایک عدالت نے قومی انٹیلی جنس سروس کے 27 اہلکاروں کو سابق صدر عمر البشیر کے خلاف احتجاجی مظاہروں کے دوران ٹیچر احمد الخیر کو گرفتار کرکے بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنا کر ہلاک کرنے کے الزام میں سزائے موت سنائی ہے۔ فروری میں ہونے والے صدر مخالف احتجاجی مظاہروں کے دوران سکیورٹی فورسز نے کریک ڈاؤن آپریشن میں درجنوں افراد کو موت کے گھاٹ اتار دیا تھا جن میں ایک استاد بھی شامل تھے۔ اپریل میں فوج کے ہاتھوں صدر عمر البشیر کی معزولی کے بعد استاد کے ماورائے عدالت قتل کا مقدمہ درج کیا گیا تھا۔ مقامی عدالت نے اسی مقدمے میں 13 دیگر ملزمان کو عمرقید کی سزا سنائی ہے، یہ تمام افراد بھی سکیورٹی اہلکار تھے جب کہ چار ملزمان کو شواہد نہ ملنے کے باعث باعزت بری کر دیا گیا۔ سزا یافتہ تمام مجرمان فیصلے کے خلاف اعلیٰ عدالتوں میں اپیل دائر کرسکتے ہیں۔

News Code 1896636

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 8 =