ایران کا یورپی ممالک کی عہد شکنی جاری رہنے کی صورت میں پانچواں قدم اٹھانے پرآمادگی کا اظہار

اسلامی جمہوریہ ایران کی اعلی قومی سلامتی کونسل کے سکریٹری جنرل نے کہا ہے کہ ایران یورپی ممالک کی عہد شکنی جاری رہنے کی صورت میں مشترکہ ایٹمی معاہدے میں اپنے وعدے بتدریج کم کرنے کے سلسلے میں پانچواں قدم اٹھانے کے لئے آمادہ ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کی اعلی قومی سلامتی کونسل کے سکریٹری جنرل علی شمخانی نے کہا ہے کہ ایران یورپی ممالک کی عہد شکنی جاری رہنے کی صورت میں مشترکہ ایٹمی معاہدے میں اپنا عہد کم کرنے کے سلسلے میں پانچواں قدم اٹھانے کے لئے آمادہ ہے۔ انھوں نے کہا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مشترکہ ایٹمی معاہدے سے خارج ہوکر معاہدے کو نقصان پہنچایا اور یورپی ممالک نے بھی اس معاہدے پر ابھی تک کوئی عمل در آمد نہیں کیا ۔ انھوں نے کہا کہ اس معاہدے پر ابھی تک صرف ایران نے ہی مکمل عمل کیا جس کی عالمی اداروں اور بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی نے توثیق کی ۔ جبکہ معاہدے میں شامل یورپی ممالک نے اس پر ابھی تک عمل نہیں کیا لہذا ایران موجودہ صورتحال ميں مشترکہ ایٹمی معاہدے سے بتدریج خارج ہونے کے اقدامات انجام دے رہا ہے ۔ انھوں نے کہا کہ اگر یورپی ممالک نے مشترکہ ایٹمی معاہدے میں کئے گئے اپنے وعدوں پر عمل شروع کردیا تو ایران اپنے اقدامات کو یہیں روک دے گا اور مشترکہ ایٹمی معاہدے پر دوبارہ عمل شروع کردےگا۔ انھوں نے کہا کہ  یورپی ممالک کی موجودہ صورتحال کے پیش نظرایران پانچواں قدم اٹھانے کے لئے آمادہ ہے۔ انھوں نے کہا کہ اگر یورپی ممالک نے معاہدے پر عمل کیا تو ہم بھی عمل کریں گے اور اگر انھوں نے اپنے وعدوں پر عمل نہ کیا تو ہمارے وعدے بھی ختم ہوجائیں گے۔

News Code 1896413

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 7 =