ایمنسٹی انٹرنیشنل کی بھارت میں طلباء کے خلاف طاقت کے بے جا استعمال کی شدید مذمت

ایمنسٹی انٹرنیشنل نے ہندوستان کے دارالحکومت نئی دہلی اوراتر پردیش میں علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں طلباء کے خلاف طاقت کے بے جا اور غلط استعمال کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق ایمنسٹی انٹرنیشنل نے ہندوستان کے دارالحکومت نئی دہلی اوراتر پردیش میں علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں طلباء کے خلاف طاقت کے بے جا اور غلط استعمال کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل کی جانب سے جاری  بیان میں کہا گیا ہے کہ پرامن احتجاج کرنے والے طلباء کے خلاف تشدد کسی بھی طرح جائز نہیں ہو سکتا۔

ایمنسٹی انٹرنیشنل کے انسانی حقوق باڈی کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر اویناش کمار کا کہنا ہے کہ جامعہ ملیہ اسلامیہ کے طالب علموں پر پولیس کے تشدد اور طلباء کو ہراساں کرنے کے خلاف تفتیش ضرور ہونی چاہیے۔

اویناش کمار نے کہا کہ طالب علموں کے اختلافِ رائے کے حق کا احترام کیا جائے، اس نے کہا کہ پولیس کے بہمیانہ اور مجرمانہ تشدد میں 100 سے زائد طالب علم زخمی ہوئے تھے اور زخمی طالب علموں کی مدد کے لیے پولیس نے یونیورسٹی میں ایمبولنسز کو بھی نہیں جانے دیا تھا۔ ذرائع کے مطابق بھارتی حکومت کے مسلمانوں کے خلاف شہریت سے متعلق ظالمانہ اور متعصبانہ قانون کے پورے ہندوستان میں عوامی مظاہرے جاری ہیں۔

News Code 1896280

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 5 =