ملائشیا کانفرنس میں سعودی عرب اورامارات کومدعو نہیں کیا گیا

سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کو دنیائے اسلام کے بارے میں آشکارا خیانتوں ، اسرائیل اور امریکہ کے ساتھ گھناؤنی ساز باز کی بنا پر ملائیشیا میں ہونے والی اسلامی ممالک کی کانفرنس میں مدعو نہیں کیا گیاتھا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے غیر ملکی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کو دنیائے اسلام کے بارے میں آشکارا خیانتوں ، اسرائیل اور امریکہ کے ساتھ گھناؤنی ساز باز کی بنا پر ملائیشیا کے دارالحکومت کوالالمپور میں 18 تا 21 دسمبر کو ہونے والی کانفرنس میں مدعو نہیں کیا گیاتھا۔ اطلاعات کے مطابق اس اجلاس کے انعقاد پر رواں سال ستمبر میں اقوام متحدہ کے اجلاس کے موقع پر ملائیشیا کے وزیر اعظم مہاتیر محمد اور ترک صدر رجب طیب اردوغان اور پاکستانی وزیر اعظم عمران خان نے اتفاق کیا تھا۔ کوالالمپورمیں  18دسمبر سے شروع ہونے والی کانفرنس میں ملائشیا ، انڈونیشیا ، ترکی، ایران اور قطر  کے سربراہان سمیت  52ملکوں کے مسلمان رہنما، دانشور، اسکالر اور مفکرین شرکت کریں گے جبکہ 19دسمبر کو سربراہان مملکت کا اجلاس منعقد ہو گا جس میں وہ مسلم امہ اور اسلامی ممالک کو درپیش مسائل کا حل نکالنے کی کوشش کریں گے۔ پاکستانی ذرائع کے مطابق پاکستانی وزير اعظم عمران خان نے سعودی عرب کے دباؤ اور پیسے کی لالچ میں آکر ملائشیا کانفرنس میں شرکت نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے، پاکستانی وزیر اعظم کے اس فیصلے پر شدید تنقید کی جارہی ہے اور پاکستانی وزیر اعظم کو سعودی عرب کا غلام ، نوکر اور ضمیر فروش کہا جارہا ہے۔ پاکستانی وزیر اعظم کے اس اقدام کو پاکستان کے استقلال کے بھی منافی قراردیا جارہا ہے۔

پاکستانی وزارت خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ کوالالمپور سربراہی کانفرنس پر سعودی عرب اور عرب امارات کو اعتراض تھا کہ اس اجلاس میں اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کے متوازی تنظیم کھڑی کی جارہی ہے جبکہ ملائشیا کے وزیر اعظم پہلے ہی اس کی تردید کرچکے ہیں۔ ملائشیا کے وزير اعظم مہاتیر محمد کا کہنا ہے کہ او آئی سی اپنے اہداف سے ہٹ چکی  ہے اور یہ تنظیم صرف سعودی عرب کے اشاروں پر چلتی ہے لیکن اس تنظیم کے متوازی تنظیم کھڑی کرنے کا کوئی ارادہ نہیں ۔ انھوں نے کہا کہ دنیائے اسلام کے مسائل اور مشکلات کو سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑا جاسکتا جو آشکارا طور پر امریکہ اور اسرائیل کے ساتھ دنیائے اسلام کے خلاف سازشیں کررہے ہیں بہر حال پاکستان کے وزير اعظم عمران خان نے اس کانفرنس سے دور رہ کر پاکستان کے وقار اور اپنے آپ کو نقصان پہنچایا ہے۔

News Code 1896276

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 2 =