پاکستانی کی سعودی عرب کے مفادات کو تحفظ فراہم کرنے کی یقین دہانی

پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے سعودی عرب کے ولیعہد محمد بن سلمان کو یقین دہانی کرائی ہے کہ پاکستان ایسے کسی بھی اقدام کا حصہ نہیں بنے گا جس سے سعودی عرب کے مفادات کو نقصان پہنچنے کا اندیشہ ہو۔

مہر خبررساں ایجنسی نے پاکستانی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے سعودی عرب کے ولیعہد محمد بن سلمان کو یقین دہانی کرائی ہے کہ پاکستان ایسے کسی بھی اقدام کا حصہ نہیں بنے گا جس سے سعودی عرب کے مفادات کو نقصان پہنچنے کا اندیشہ ہو۔ ذرائع کے مطابق کوالالمپور میں پاکستان، ترکی، ایران، قطر اور انڈونیشیا کے  رہنماؤں کی کانفرنس ہونے والی ہے سعودی عرب اس بلاک کو  او آئی سی کے متبادل اسلامی بلاک کے طور پر دیکھ رہا ہے اور اس کانفرنس میں اپنی اور اپنے عرب اتحادیوں کی غیر موجودگی سے پریشان ہے۔یہ کانفرنس ملائشین وزیر اعظم مہاتیر محمد کی میزبانی میں منعقد ہورہی ہے اور وہ اس بات کا کھلے عام اظہار کرچکے ہیں کہ او آئی سی مسلم امہ کے مفادات کے تحفظ میں ناکام ہوچکی ہے اس لیے یہ اتحاد او آئی سی کا متبادل ثابت ہوسکتا ہے جب کہ سعودی عرب سمجھتا ہے کہ اس طرح کا نیا اسلامی بلاک مسلم دنیا میں سعودی عرب کے کردار کو کم کرسکتا ہے، اسی تناظر میں پاکستان کی سول اور فوجی قیادت نے سعودی عرب کے متعدد دورے کیے ہیں۔اطلاعات کے مطابق سعودی عرب اور ترکی کے درمیان سعودی صحافی خاشقجی کی ہلاکت کے بعد سے کشیدگی چلی آرہی ہے پاکستان اسے کم کرنے کی بھی کوشش کر رہا ہے۔ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کوالالمپور کانفرنس کے حوالے سے سعودی عرب اور پاکستان کے درمیان کسی قسم کی غلط فہمی کی تردید کی ہے۔

News Code 1896228

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 7 + 3 =