بھارت میں مسلم مخالف متنازعہ ترمیمی بل کو سپریم کورٹ میں چیلنج کردیا گیا

بھارتی پارلیمان سے منظور ہونے والے شہریت سے متعلق متنازعہ مسلم مخالف ترمیمی بل کو سپریم کورٹ میں چیلنج کردیا گیا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے بھارتی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ بھارتی پارلیمان سے منظور ہونے والے شہریت سے متعلق متنازعہ  مسلم مخالف ترمیمی بل کو سپریم کورٹ میں چیلنج کردیا گیا۔ اطلاعات کے مطابق سیاسی جماعت انڈین یونین مسلم لیگ  نے تارکین وطن کو بھارتی شہریت دینے کے متنازع بل کے خلاف درخواست سپریم کورٹ میں دائر کردی ہے۔درخواست میں موقف اپنایا گیا ہے کہ یہ بل برابری،بنیادی حقوق اور زندہ رہنےکے حق سے متعلق آئین کی شقوں سے متصادم   ہے لہذا عدالت فوری طور پر اسے غیر قانونی قرار دے۔ بھارتی لوک سبھا سے پیر کے روز منظوری کے بعد شہریت سے متعلق مسلم مخالف متنازع بل کو گزشتہ روز بھارتیہ جنتا پارٹی کی جانب سے وزیر داخلہ امیت شاہ نے ایوان بالا راجیہ سبھا میں بھی پیش کیا تھا جو  105 ووٹوں کے مقابلے میں 125 ووٹ سے منظور کیا گیا تھا۔ پارلیمان سے  منظوری کے بعد متنازع بل پر عملدرآمد کے لیے تمام رکاوٹیں ختم ہوگئی ہیں جب کہ بل کے خلاف مشتعل مظاہروں کو بزور طاقت روکنے کیلیے آسام میں فوج طلب کرلی گئی ہے۔

News Code 1896135

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 2 =