ڈیرہ اسماعیل خان میں لڑکی کو برہنہ کرکے گھمانے والا ملزم گرفتار

پاکستان کے صوبہ خیبرپختونخواہ کے علاقے ڈیرہ اسماعیل خان میں 2 برس قبل لڑکی کو برہنہ کرکے گلی میں گھمانے والے مرکزی ملزم کو پولیس نے گرفتار کرلیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ڈان کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان کے صوبہ خیبرپختونخواہ کے علاقے ڈیرہ اسماعیل خان میں 2 برس قبل لڑکی کو برہنہ کرکے گلی میں گھمانے والے مرکزی ملزم کو پولیس نے گرفتار کرلیا ہے۔ پولیس حکام کے مطابق مرکزی ملزم سجاول، ڈسٹرکٹ پولیس افسر (ڈی پی او) دلاور خان بنگش کے دفتر میں پولیس کے سامنے پیش ہوگیا۔

واضح رہے کہ سجاول پر اکتوبر 2017 میں ایک لڑکی کو برہنہ کرکے گلی میں گھمانے کا الزام ہے، پولیس نے اس معاملے میں دو دیگر افراد کو بھی گرفتار کیا تھا جبکہ اس وقت سجاول فرار ہوگیا تھا۔  ملزم کے فرار ہونے کے بعد پولیس نے اسے گرفتار کرنے کے لیے کراچی اور پنجاب کے مختلف مقامات پر چھاپے بھی مارے تھے۔

واضح رہے کہ مذکورہ کیس کی حالیہ سماعت پر پشاور ہائی کورٹ نے اہم ملزم کی عدم گرفتاری پر برہمی کا اظہار کیا تھا۔  عدالت نے ملزم کی عدم گرفتاری پر ڈپٹی انسپکٹر جنرل (ڈی آئی جی) پولیس اور علاقے کے ضلعی پولیس افسر کو طلب کرلیا تھا۔ جسٹس اکرام اللہ خان اور جسٹس مسرت ہلالی پر مشتمل بینچ نے آئندہ سماعت کے لیے 20 نومبر کی تاریخ مقرر کرتے ہوئے دونوں پولیس افسران کو ذاتی حیثیت میں پیش ہونے کا حکم دیا تھا۔اس سے قبل عدالت عالیہ کے بینچ نے 22 نومبر 2017 کو متاثرہ لڑکی کی جانب سے دائر درخواست کو نمٹا دیا تھا۔ساتھ ہی عدالت عالیہ نے آئی جی پی کو ہدایت کی تھی کہ وہ تفتیش سے متعلق رپورٹ پی ایچ سی کے ہیومن رائٹس سیل کے ڈائریکٹر کو پیش کریں۔

News Code 1895445

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 11 =