امریکی فوجی شام کے شمال سے خارج ہوکر عراق کے مغرب میں تعینات ہوں گے

امریکی وزیر دفاع نے دعوی کیا ہے کہ امریکی فوجی شام کے شمال سے خارج ہوکرعراق کے مغرب میں تعینات ہوں گے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے واشنگٹن پوسٹ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکی وزیر دفاع مارک اسپرنے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئےدعوی کیا ہے کہ امریکی فوجی شام کے شمال سے خارج ہوکرعراق کے مغرب میں تعینات ہوں گے۔ امریکی وزیر دفاع نے کہا کہ ایک ہزار امریکی فوجی شام سے عقب نشینی کرنے کے بعد عراق کے مغرب میں مستقر ہوں گے ۔ جہاں وہ داعش کا مقابلہ جاری رکھیں گے ، امریکہ داعش کو بہانہ بنا کر مشرق وسطی میں اپنے فوجیوں کو باقی رکھنے کا جواز بناتا رہتا ہے۔

ترک صدر اردوغان اور امریکہ کے نائب صدر مائیک پینس کے درمیان ہونے والےمعاہدے کے مطابق ترکی کی سرحد کو شامی  کرد وں سے خالی کرایا جائےگا ۔ امریکہ نے شام کے شمال سے فوجی عقب نشینی کرکے ترکی کو کردوں کے خلاف فوجی آپریشن کار استہ فراہم کیا۔  اور پھر ترکی کے خلاف اقتصادی پابندیوں کی دھمکیاں دینا شروع کردیں ۔ امریکہ خطے میں عدم استحکام پیدا کرنے کی پالیسی پر گامزن ہے اور ترکی کو امریکہ کے شوم منصوبہ کو پایہ تکمیل تک پہنچانے میں مدد فراہم نہیں کرنی چاہیے بلکہ کردوں کے ساتھ  معاملات کو مذاکرات کے ذریعہ حل کرنا چاہیے۔

News Code 1894715

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 3 =