سعودی عرب کے مہنگے امریکی ہتھیار یمنی ڈرونز کے سامنے ناکارہ ثابت ہوگئے

سعودی عرب نے امریکہ سے اپنی حفاظت کے لئے بڑے ہی مہنگے ہتھیار خریدے تھے اور اسے امریکہ کے مہنگے ہتھیاروں پر بڑا ناز تھا لیکن یمن کے ڈرونزطیاروں نے سعودی عرب کے مہنگے ہتھیاروں کو ناکارہ ثابت کردیا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے رائٹرز کے حوالے سےنقل کیا ہے کہ سعودی عرب نے امریکہ سے اپنی حفاظت کے لئے بڑے ہی مہنگے ہتھیار خریدے تھے اور اسے امریکہ کے مہنگے ہتھیاروں پر بڑا ناز تھا لیکن یمن کے ڈرونزطیاروں نے سعودی عرب کے مہنگے ہتھیاروں کو ناکارہ ثابت کردیا۔

رائٹرز کے مطابق سعودی عرب نے مغربی ممالک سے اسلحہ خریدنے کے لئے اربوں ڈالر صرف کئے ہیں ۔ عرب ماہرین کا کہنا ہے کہ سعودی عرب نے امریکہ سے دفاعی میزائل سسٹم کی خرید میں اربوں ڈالر صرف کئے، بقیق پر حملے کے وقت وہ میزائل کہاں تھے؟  رائٹرز کا کہنا ہے کہ 1990 اور 91 میں عراق کے سابق معدوم صدر صدام نے کویت کی آئل فیلڈ کو تباہ کیا تھا اور اس کے بعد سعودی عرب کی تیل کی تنصیبات پر حملہ بدترین حملہ ہے۔ واضح رہے کہ یمنی فورسز اور قبائل نے گذشتہ سنیچر کو سعودی عرب کے علاقہ بقیق اور الخریص میں تیل کی دو تنصیبات پر حملہ کرکے انھیں تباہ کردیا جس کے بعد سعودی عرب کی تیل کی سپلائی نصف سے بھی کم سطح تک پہنچ گئی ہے۔ آج بڑے شیطان امریکہ پر فخر اور ناز کرنے والے سعودی عرب کو دنیا میں ذلت اور رسوائی کا سامنا ہے۔

News Code 1893872

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 13 =