جان بولٹن کی برطرفی سےعرب شیخ نشینوں اور اسرائیلی وزیر اعظم پر سوگ طاری

دنیائے عرب کے معروف تجزیہ نگار نے امریکہ کے قومی سلامتی کے مشیر جان بولٹن کی برطرفی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ جان بولٹن کی برطرفی سےعرب شیخ نشینوں اور اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو پر سوگ طاری ہوگیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق دنیائے عرب کے معروف تجزیہ نگار عبدالباری عطوان نے امریکہ کے قومی سلامتی کے  مشیر جان بولٹن کی برطرفی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ جان بولٹن کی برطرفی سےعرب شیخ نشینوں اور اسرائیلی وزیر اعظم پر سوگ طاری ہوگیا ہے۔ عطوان کا کہنا ہے کہ جان بولٹن کے ایران کے اسلامی نظام کو بدلنے کے تمام خواب چکنا چور ہوگئے ہیں اور امریکی صدر نے اسے نہایت ہی ذلت آمیز طریقہ سے وائٹ ہاؤس سے باہر کردیا ہے۔

عطوان کا کہنا ہے کہ جان بولٹن کی دشمنی صرف ایران کے ساتھ ہی نہیں تھی بلکہ وہ شمالی کوریا اور روس کے خلاف پر متحرک تھے۔عطوان کا کہنا ہے کہ جان بولٹن در حقیقت اسرائیل اور عرب شیخ نشینوں کے روح رواں تھے۔

وہ ٹرمپ کو تین ممالک کے خلاف فوجی کارروائی حتی ایٹم بم کے حملے میں تباہ کرنے کے سلسلے میں بھی مسلسل اکسا

رہے تھے۔ جان بولٹن انتہا پسند نظریہ کے حامی تھے جس کے وائٹ ہاؤس سے خارج ہونے کے بعد اسرائیل اور اس کے حامی عرب ممالک پر سوگ طاری ہوگیا ہے۔

News Code 1893677

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 7 =