بھارت نے اپنے نئے قوانین میں مسعود اظہر اور حافظ سعید کو دہشت گرد قرار دے دیا

بھارت نے اپنے نئے قوانین میں جیش محمد کے سربراہ مولانا مسعود اظہر اور جماعت الدعوۃ کے سربراہ حافظ سعید کو دہشت گرد قراردے دیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایسوسی ایٹڈ پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ بھارت نے اپنے نئے قوانین میں جیش محمد کے سربراہ مولانا مسعود اظہر اور جماعت الدعوۃ کے سربراہ حافظ سعید کو دہشت گرد قراردے دیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق بھارت کی وزارت داخلہ نے دونوں افراد کے نام " غیر قانونی سرگرمیوں کی روک تھام کے ترمیمی ایکٹ " میں شامل کیے ہیں۔

بھارت کے نئے قانون کے مطابق حکومت کو یہ اختیار حاصل ہوگا کہ وہ دہشت گردی کی کارروائیوں میں ملوث افراد، اس کی تیاری کرنے یا پھر اس کے فروغ کے لیے کام کرنے والوں کو دہشت گرد قرار دے سکے۔

دہشت گرد قرار دینے کے بعد ان افراد کے اثاثوں اور بینک اکاؤنٹس کو منجمد کیا جاسکتا ہے جبکہ اس کے ملک چھوڑنے پر بھی پابندی ہوگی۔ امریکہ نے بھارت کے اس اقدام کی تعریف کی ہے۔ امریکہ کے اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ میں انچارج امور جنوبی ایشیا ایلس ویلز نے مسعود اظہر، حافظ سعید، زاکر الرحمٰن لکھوی اور داؤد ابراہیم کو دہشت گرد قرار دینے کے لیے بھارت کے قانونی اقدام کے استعمال کی تعریف کی۔ سماجی روابط کی ویب سائٹ پر اپنے پیغام میں ان کا کہنا تھا کہ ’ہم اس فیصلے میں بھارت کے ساتھ ہیں، اس اقدام کے بعد دہشت گردی کے خلاف امریکہ اور بھارت کی مشترکہ کوششوں کے امکانات پیدا ہوگئے ہیں۔

News Code 1893511

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 9 + 3 =