او آئی سی کا کشمیر سے کرفیو ہٹانے اور مواصلاتی نظام بحال کرنے کا مطالبہ

اسلامی تعاون کی تنظیم نے بھارت سے مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے تحت حل کرنے اور کرفیو ختم کرکے مواصلاتی نظام کی فوری بحال کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے الجزیرہ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ اسلامی تعاون کی تنظیم نے بھارت سے مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے تحت حل کرنے اور کرفیو ختم کرکے مواصلاتی نظام کی فوری بحال کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ دنیا بھر کے 57 مسلم ممالک کے درمیان باہمی تعاون کی عالمی تنظیم ’او آئی سی‘ نے کشمیری عوام کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ کشمیر پاکستان اور بھارت کے درمیان عالمی سطح پر تسلیم شدہ دو طرفہ مسئلہ ہے جس پر بھارت یک طرفہ طور پر کوئی فیصلہ نہیں کرسکتا۔

او آئی سی کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ بھارت کی جانب سے یک طرفہ طور پر آرٹیکل 370 اور 35-اے کو منسوخ کر کے کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کرنے کا فیصلہ عالمی قوانین کی کھلی خلاف ورزی ہے۔ بھارت سے 25 روز سے جاری مسلسل کرفیو کو ختم کرکے مواصلاتی نظام کو بحال کرنے مطالبہ کرتے ہیں۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ او آئی سی اقوام متحدہ کی قراردوں کے تحت کشمیر کی خصوصی حیثیت تسلیم کرتا ہے اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کے تحت ہی مسئلہ کشمیر کا پائیدار حل نکالا جانا چاہیے۔  جموں وکشمیر کی آئینی حثیت میں تبدیلی بھارت کا یکطرفہ اقدام ہے۔

News Code 1893398

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 11 =