صدر روحانی کی سفارتکاری اور طاقت دونوں ہاتھوں کے باہم ہونے پر تاکید

اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر حسن روحانی نے کہا ہے کہ ایک ہاتھ کافی نہیں بلکہ سفارتکاری اور طاقت دونوں ہاتھوں کو باہم ہونا چاہیے جو لوگ ایک ہاتھ کو کافی سمجھتے ہیں وہ غلطی پر ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی کے نامہ نگار کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر حسن روحانی نے کہا ہے کہ ایک ہاتھ کافی نہیں بلکہ سفارتکاری اور طاقت دونوں ہاتھوں کو باہم ہونا چاہیے جو لوگ ایک ہاتھ کو کافی سمجھتے ہیں وہ غلطی پر ہیں۔صدر حسن روحانی نے دیہی علاقوں کی ترقی اور پیشرفت کے سلسلے میں برپا کی گئی نمائش کا قریب سے مشاہدہ کیا ۔ صدر حسن روحانی نے مختلف وزارتخانوں کی جانب سے برپا کی گئی نمائش میں شریک افراد سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ معاشرے اور ملک میں مختلف قسم کی طبقہ بندیاں ہیں جن میں مالدارو فقیر، عالم و جاہل  ، فنون و مہارت سے آراستہ اور عدم فنون و عدم مہارت کے طبقات شامل ہیں ان میں ایک طبقہ شہری اور دیہی طبقہ بھی ہے۔ صدر روحانی نے کہا کہ ایک دور میں انسان دیہاتی ہونے پر شرم کرتا تھا اور شہری ہونے پر فخر محسوس کرتا تھا لیکن آج دیہی ترقی سے یہ ثابت ہوگيا ہے جو وسائل شہروں میں موجود ہیں وہی وسائل دیہاتوں میں بھی پہنچ گئے اور شہری و دیہی طبقہ بندی کا ترقیاتی وسائل کے لحاظ سے برابری کا مقابلہ ہے۔

صدر روحانی نے کہا کہ ابھی دیہاتوں میں کافی مشکلات باقی ہیں لیکن اس کے باوجود دیہاتوں میں ترقی اور پیشرفت کا سلسلہ جاری ہے اور آج جو وسائل شہر میں موجود ہیں وہی وسائل دیہاتوں ميں بھی پہنچ گئے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ دیہاتی لوگ  آج گیس، بجلی ، پانی، اسپتال ، تعلیم اور سڑک کی سہولیات سے فیض یاب ہیں۔

صدر روحانی نے اندرونی پیداوار پر تاکید کرتے ہوئے کہا کہ ایران ترقی اور پیشرفت کی شاہراہ پر گامزن ہے ابھی ہمیں کافی مسافت طے کرنی ہے اور ہم اس مسافت کو طے کرنے کی تلاش و کوشش جاری رکھے ہوئے ہیں۔

News Code 1893245

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 14 =