امریکہ کی مخالفت کے باوجود ایران کا تیل بردار جہاز گریس 1 آزاد ہوگیا

اسلامی جمہوریہ ایران کے تیل بردار جہاز گریس 1 کو بہت سے سیاسی نشیب و فراز کے بعد جبل الطارق کی عدالت کی جانب سے آزادی کا حکم مل گیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے اسپوٹنک کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران کے تیل بردار جہاز گریس 1 کو بہت سے سیاسی نشیب و فراز کے بعد جبل الطارق کی عدالت کی جانب سے آزادی کا حکم مل گیا ہے۔ ایرانی آئل ٹینکر کو امریکی مخالفت کے باوجود آزاد کردیا گیا ہےامریکہ ایرانی تیل بردار جہاز کو اپنے مفادات کی خاطرقبضہ میں لیناچاہتا تھا ، لیکن ایرانی حکام نے امریکہ کی اس مذموم کوشش کو ناکام بنادیا۔ جبل الطارق کی اعلی عدالت کے جج انٹونی ڈیڈلی کا کہنا ہے کہ عدالت نے ٹھوس شواہد اور مدارک کی بنا پر ایرانی تیل بردار جہاز کو آزاد کرنے کا کم دیا ہے۔ اس سے قبل برطانوی ذرائع ابلاغ نے اعلان کیا تھا کہ ایرانی تیل بردار جہاز کو جمعرات کے دن 15 اگست کو  آزاد کردیا جائےگا۔ واضح رہے کہ برطانوی بحریہ کے اہلکاروں نے ایک ماہ قبل ایرانی آئل ٹینکر پر قبضہ کرلیا تھا جس کے جواب میں ایران نے بھی برطانوی تیل بردار جہاز کو خلیج فارس میں عالمی قوانین کی خلاف ورزی کرنے کے جرم میں ضبط کرلیا تھا۔ ایران کی جوابی کارروائی کے بعد برطانوی حکام نے ایران کے ضبط شدہ آئل ٹینکر کو آزاد کرنے میں ہی عافیت سمجھی اور آج قانونی تشریفات اور شواہد کے پیش نظر ایرانی آئل ٹینکر کو آزاد کردیا گیا ہے۔

News Code 1892962

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 13 =