بھارت کا امریکہ سے ڈرون طیارے خریدنے پر نظر ثانی کا فیصلہ

اسلامی جمہوریہ ایران نے کچھ ہفتہ قبل امریکہ کے پیشرفتہ جاسوس طیارے کو سرنگوں کردیا تھا اور ایران کی طرف سے یہ ڈرون طیارہ گرائے جانے کے بعد بھارت نے امریکہ سے یہ ڈرون طیارے خریدنے کے فیصلے پر نظرثانی شروع کر دی ہے یہ معاملہ 6 ارب ڈالر مالیت کا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے اسپوٹنک کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے کچھ ہفتہ قبل امریکہ کے پیشرفتہ جاسوس طیارے کو سرنگوں کردیا تھا اور ایران کی طرف سے یہ ڈرون طیارہ گرائے جانے کے بعد بھارت نے امریکہ سے یہ ڈرون طیارے خریدنے کے فیصلے پر نظرثانی شروع کر دی ہے یہ معاملہ 6 ارب ڈالر مالیت کا ہے۔ اطلاعات کے مطابق کچھ ہفتے قبل ایران نے امریکہ کا ایک جاسوس ڈرون طیارہ مار گرایا تھا۔ اس واقعے سے امریکہ کی جو سبکی ہوئی سو ہوئی مگر اب اس کی وجہ سے اسے 6ارب ڈالر کا نقصان ہونے کا بھی احتمال ہے کیونکہ ایران کی طرف سے یہ ڈرون طیارہ گرائے جانے کے بعد بھارت نے امریکہ سے یہ ڈرون طیارے خریدنے کے فیصلے پر نظرثانی شروع کر دی ہے اور غالب امکان ہے کہ اب وہ یہ جاسوس ڈرون طیارے نہیں خریدے گا۔ اسپوٹنک کے مطابق بھارت امریکہ سے 30بغیر پائلٹ ایریل وہیکلز نامی جاسوس ڈرون طیارے خریدنے کا فیصلہ کیاتھا جن پر 6ارب ڈالر لاگت آنی تھی۔ تاہم اب ذرائع کا کہنا ہے کہ انڈین ایئرفورس اس فیصلے پر نظرثانی کر رہی ہے، کیونکہ ایران کی طرف سے یہ ڈرون گرائے جانے کے بعد اس کے موثر اور بہتر کام کرنے کی صلاحیت پر سوال اٹھ کھڑے ہوئے ہیں۔ ذرائع کے مطابق انڈین ایئرفورس کا خیال ہے کہ بھارت کے ہمسائے میں پاکستان اور چین ہیں جن کے پاس زمین سے فضاءمیں مار کرنے والے میزائل سسٹمزموجود ہیں۔ اگر ایران اس ڈرون کو گرا سکتا ہے تو پاکستان اور چین بھی اسے گرا سکتے ہیں۔

News Code 1892621

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 12 =