ایران نے میزائل کے بارے میں مذاکرات کا دعوی مسترد کردیا

اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے ایران کے میزائل سسٹم کے بارے میں مذاکرات پر مبنی مغربی ذرائع ابلاغ کے دعوے کو مسترد کردیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان سید عباس موسوی نے ایران کے میزائل سسٹم کے بارے میں مذاکرات پر مبنی مغربی ذرائع ابلاغ کے دعوے کو مسترد کردیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ اس سلسلے میں ایرانی وزير خارجہ نے بی بی سی کی مجری کے سوال کا ٹھوس اور جامع جواب دیتے ہوئے خطے میں امریکی ہتھیاروں کی فروخت پر سوالیہ نشان لگا دیا ہے۔ ترجمان نے کہا کہ  ایرانی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ " اگر امریکہ میزائل کے بارے میں مذاکرات کرنا چاہتا ہے تو اسے پہلے خطے کے ممالک کو میزائل اور ہتھیاروں کو فروخت متوقف کرنا  پڑےگا۔  ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ ایران کا میزائل نظام دفاعی نوعیت کا ہے جس کے بارے میں مذاکرات ممکن نہیں ہیں۔ واضح رہے کہ ایسوسی ایٹڈ پریس نے خطے میں امریکی ہتھیاروں کی فروخت  کے بارے میں ایرانی وزير خارجہ کے لفظ کو حذف کرکے یہ تاثر دینے کی کوشش کی ہے کہ ایران میزائل سسٹم کے بارے میں مذاکرات کے لئے آمادہ ہوسکتا ہے۔ لیکن اقوام متحدہ میں ایران کی نمائندےگی نے ایسوسی ایٹڈ پریس کی اس خـبر کو غلط اور بے بنیاد  قراردیتے ہوئے کہا ہے کہ ایسوسی ایٹڈ پریس کے صحافی انگریزی اچھی طرح جانتے ہیں اور انھوں نے عمدی طور پر امریکی میزائلوں اور ہتھیاروں کی خطے میں فروخت کے بارے میں ایرانی وزير خارجہ کی تنقید کو نظر انداز کیا ہے۔

News Code 1892214

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 8 + 7 =