پاکستان کی دو لڑکیوں کو چین اسمگل کرنے کی کوشش ناکام

چينی لڑکوں کے توسط سے 2 پاکستانی لڑکیوں کو چین اسمگل کرنے کی کوشش کو ناکام ہوگئی۔

مہر خبررساں ایجنسی نے جنگ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ چينی لڑکوں کے توسط سے 2 پاکستانی لڑکیوں کو چین اسمگل کرنے کی کوشش کو ناکام ہوگئی۔ اطلاعات کے مطابق سرگودھا کی تحصیل کوٹ مومن کےنواحی علاقہ نصیر پور میں دو لڑکیوں تصور بی بی اورثمینہ کو چینی لڑکے سہانے خواب دکھا کر اپنے ساتھ لاہور لے گئے اور اپنے آپ کو مسلمان ظاہر کرکے نکاح کرلیا۔ ملزمان لڑکیوں کو چین اسمگل کرنا چاہتے تھے، فروخت کرنے کے انکشاف ہونے پر لڑکیاں فرار ہوکر واپس کوٹ مومن پہنچ گئیں ۔کوٹ مومن کے نواحی علاقہ نصیر پور کی رہائشی غریب لڑکیوں کو نوکری اور پیسوں کا لالچ دے کر چینی لڑکوں نے اپنے آپ کو مسلمان ظاہر کرکے فرضی نکاح رچایا اور مزید پیسوں کا لالچ دے کر انہیں چین اسمگل کرنا چاہتے تھے اوردونوں لڑکیوں کو لاہور نامعلوم جگہ پر رکھا ہواتھا جہاں سے دونوں فرار ہوکر کوٹ مومن پہنچ گئیں۔ لاہور سے کوٹ مومن واپس پہنچنے والی دونوں لڑکیوں نے فیملی جج کوٹ مومن میں دعویٰ تنسیخ نکاح،دعویٰ تکذیب نکاح دائر کردیا ۔تصور بی بی کےخاوند کا نام ذینگ ایکسنگاو ولد ذینگ ایکسی شان ہے جبکہ دوسری لڑکی ثمینہ کے خاوند کا نام مسٹر چاو ذین بنگ عرف ساجد ہے جولاہور کینٹ لاہور میں رہائش پذیر ہیں جہاں پر شادی کونسل کے نام پر آفس بنا رکھا ہے ۔لڑکیوں کی طرف سے عدالت میں دی جانیوالی تحریری درخواستوں میں الزام عائد کیا گیا کہ دونوں چینی افراد انہیں لاہور میں غلط کاری پر مجبور کرتے تھے اور انکار پر تشدد کا نشانہ بناتے تھے ۔

News Code 1890667

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 7 =