جان بولٹن سے اس کے رئیس کی طرح میانہ روی کی توقع نہیں کی جاسکتی

جرمنی کے تجزیہ نگار نے مہر نیوز کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکی صدر کے مشیر جان بولٹن سے اس کے رئیس کی طرح میانہ روی کی توقع نہیں کی جاسکتی۔

مہر خبررساں ایجنسی کے بین الاقوامی امور کے نامہ نگار کے ساتھ گفتگو میں جرمنی کے تجزیہ نگار پیٹر فیلپ نے کہا ہے کہ امریکی صدر کے قومی سلامتی کے مشیر جان بولٹن سے اس کے رئیس کی طرح میانہ روی کی توقع نہیں کی جاسکتی۔ ایران کے خلاف سخت مؤقف رکھنے میں امریکی صدر کے قومی سلامتی کے مشیرجان بولٹن کافی معروف ہیں وہ متعدد بار ایران کے خلاف فوجی اقدام کی دھمکی بھی دے چکے ہیں۔

جرمنی کے تجزیہ نگار نے مشترکہ ایٹمی معاہدے سے امریکہ کے خارج ہونے کے بعد اس معاہدے کے تحفظ کے سلسلے میں یورپی ممالک کے اقدامات کے بارے میں سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ ایک ایسا میکانزم تیار کیا ہے جس کے ذریعہ ایران کے خلاف امریکی پابندیوں کے اثرات کو کم کرنے کی کوشش کی گئی ہے اور اس میں ایران اور یورپ کے درمیان تجارت کے فروغ کو مد نظر رکھا گیا ہے۔

جرمن تجزیہ نگار فلیپ نے جان بولٹن کی طرف سے ایران کے خلاف فوجی اقدام کی دھمکی کے بارے میں سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ جان بولٹن انتہا پسند ہے اور اس سے اس کے رئیس کی طرح میانہ روی کی توقع نہیں کی جاسکتی۔

News Code 1890286

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 0 =