پاکستانی حکومت نے رضا باقر کو گورنر اسٹیٹ بینک مقرر کردیا

پاکستانی حکومت نے مجتبیٰ میمن کو چیئرمین ایف بی آر اور رضا باقر کو گورنر اسٹیٹ بینک مقرر کردیا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایکسپریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستانی حکومت نے مجتبیٰ میمن کو چیئرمین ایف بی آراوررضا باقر کو گورنر اسٹیٹ بینک مقرر کردیا۔اطلاعات کے مطابق گورنر اسٹیٹ بینک اور چیئرمین ایف بی آر کے عہدے خالی ہونے کے بعد وزارت خزانہ کے ایڈیشنل سیکریٹری مجتبیٰ میمن کو فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کا چیئرمین اور آئی ایم ایف کے آفیسر رضا باقر کو گورنر اسٹیٹ بینک مقرر کردیا ہے اس حوالے سے نوٹی فکیشنز جاری ہوچکے ہیں۔سابق چیئرمین جہانزیب خان کی جگہ آنے والے نئے چئیرمین ایف بی آر احمد مجتبی کا تعلق پاکستان کسٹمز سروس سے ہے اور ان کا شمار بہتر ایڈمنسٹریٹر کے طور پر ہوتا ہے۔ انہیں کچھ عرصہ قبل ایڈیشنل سیکریٹری خزانہ لگایا گیا تھا، اس سے پہلے احمد مجتبی میمن ڈائریکٹر جنرل آئی او سی او کراچی تعینات رہ چکے ہیں۔ اسی طرح سابق گورنر طارق باجوہ کی جگہ آنے والے نئے گورنر اسٹیٹ بینک رضا باقر آئی ایم ایف کے آفیسر ہیں جو آج کل آئی ایم ایف کے مصر کے سینئر نمائندے کے طور پر تعینات ہیں ۔انہیں تین سال کے لیے گورنر اسٹیٹ بینک مقرر کیا گیا ہے، ان کی بطور گورنر اسٹیٹ بینک تین سالہ مدت کا اطلاق ان کے چارج سنبھالنے کی تاریخ سے ہوگا۔اس سے قبل اسلام آباد میں مشیر خزانہ حفیظ شیخ کا کہنا تھا کہ رضا باقر جیسے اچھے لوگوں کو واپس لانے کی کوشش کررہے ہیں۔

News Code 1890257

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 9 + 5 =