پاکستان میں شیعہ مسلمان جوانوں کی جبری گمشدی کے خلاف عوامی احتجاج جاری

پاکستان کے شہر کراچی میں پاکستان کے صدر عارف علوی کے ہاؤس کے سامنے شیعہ مسلمان جوانوں کی جبری گمشدی کے خلاف عوامی احتجاج کا سلسلہ چھٹے دن بھی جاری ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے پاکستانی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان کے شہر کراچی میں پاکستان کے صدر عارف علوی کے ہاؤس کے سامنے شیعہ مسلمان جوانوں کی جبری گمشدی کے خلاف عوامی احتجاج کا سلسلہ چھٹے دن بھی جاری ہے۔ اطلاعات کے مطابق احتجاجی دھرنے میں عوام کے مختلف طبقات کے علاوہ شیعہ اور سنی علماء بھی موجود ہیں۔ مظاہرین کا کہنا ہے کہ پاکستانی خفیہ اداروں کے ہاتھوں پاکستانی شیعہ مسلمان جوانوں کی جبری گمشدگی  کے معاملے پر پاکستنای قوم کو سخت تشویش لاحق ہے۔ ذرائع کے مطابق پاکستان کے موجود وزیر اعظم عمران خان نے وزیر اعظم منتخب ہونے سے قبل عوام سے وعدہ کیا تھا کہ اگر وہ وزیر اعظم منتخب ہوگئے تو پھر کسی بھی پاکستانی شہری کی جبری گمشدگی کا واقعہ رونما نہیں ہوگا اور وہ اس کی روک تھام کریں۔ لیکن اس کے باوجود خفیہ ادارے درجنوں شیعہ بےگناہ جوانوں کو جبری طور پر اٹھا کر لےگئے ہیں جن کا تاحال کوئی پتہ نہیں۔ گمشدہ افراد کے اہلخانہ بھی احتجاجی دھرنوں میں شریک ہیں۔

News Code 1890244

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 11 =