پاکستان میں ایڈز پھیلانے کے الزام میں ایک سرکاری ڈاکٹر گرفتار

پاکستان کے صوبہ سندھ کے علاقہ رتوڈیرو کی پولیس نے ایڈز پھیلانے کے الزام میں ایک مقامی ڈاکٹر کو گرفتار کرلیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ڈان کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان کے صوبہ سندھ  کے علاقہ رتوڈیرو کی پولیس نے ایڈز پھیلانے کے الزام میں ایک مقامی ڈاکٹر کو گرفتار کرلیا ہے۔ پولیس کے مطابق گرفتار کیے جانے والے مظفر گھانگھارو سرکاری ڈاکٹر ہیں، جو ایک نجی کلینک بھی چلا رہے تھے جبکہ وہ خود بھی مبینہ طور پر ایچ آئی وی کے مریض ہیں۔

پولیس نے ملزم کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کے بعد انہیں گرفتار کرکے مقامی عدالت میں پیش کیا اور عدالت سے ملزم کا 3 روزہ ریمانڈ دینے کی استدعا کی۔

لاڑکانہ کی ضلعی حکومت میں صحت کے عہدیدار نے صحافیوں کو بتایا کہ ضلع میں ایچ آئی وی مریضوں کی تعداد 39 ہونے کے بعد علاقے میں تشویش کی لہر دوڑ گئی اور حکام علاقے میں اس وائرس کے پھیلاؤ کی وجہ تلاش کررہے ہیں۔

سندھ میں ایڈز کنٹرول پروگرام کے انچارج ڈاکٹر سکندر میمن کا کہنا تھا کہ ایک ٹیم رتوڈیرو میں آئندہ ہفتے بھیجی جائے گی تاکہ مقامی افراد میں بڑھتے ہوئے ایچ آئی وی وائرس کی وجوہات تلاش کی جا سکے۔لاڑکانہ کے ڈپٹی کمشنر (ڈی سی) محمد صدیقی نے میڈیا کو ایف آئی آر کے اندراج اور ڈاکٹر کی گرفتاری کی تصدیق کی۔ان کا کہنا تھا کہ وہ اس حوالے سے اعلیٰ حکام کو تفصیلی رپورٹ بھیج رہے ہیں تاکہ اس معاملے میں مزید تحقیقات کی جاسکیں۔

News Code 1890141

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 4 =