رہبر معظم کی ایران اور پاکستان کے تعلقات کو دشمنوں کی مرضی کے برخلاف مضبوط اور مستحکم بنانے پر تاکید

رہبر معظم انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے پاکستان کے وزير اعظم عمران خان اور اس کے ہمراہ وفد کے ساتھ ملاقات میں ایران اور پاکستان کے تعلقات کو دشمنوں کی مرضی کے برخلاف مضبوط بنانے پر تاکید کی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کے نامہ نگار کی رپورٹ کے مطابق پاکستان کے وزير اعظم عمران خان اور اس کے ہمراہ وفد نے آج سہ پہر کو رہبر معظم انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای سے ملاقات کی ۔ رہبر معظم انقلاب اسلامی نے اس ملاقات میں ایران اور پاکستان کی دو قوموں کےدرمیان گہرے،  دیرینہ، برادرانہ اور تاریخی تعلقات کی طرف اشارہ کرتے ہوئےفرمایا: ایران اور پاکستان کے تعلقات کو دشمنوں کی مرضی کے برخلاف مضبوط اور مستحکم بنانے پر توجہ مبذول کرنی چاہیے۔

رہبر معظم انقلاب اسلامی نے برصغیر ہندوستان میں مسلمانوں کی حکومت کے عروج کی طرف اشارہ کرتے ہوئے فرمایا: انگریزوں نے بر صغیر ہندوستان میں اسلامی ثقافت اور تمدن پر کاری ضرب وارد کی ۔

رہبر معظم انقلاب اسلامی نے پاکستان کی ممتاز شخصیات علامہ اقبال لاہوری اور محمد علی جناح کی طرف اشارہ کرتے ہوئے فرمایا: اچھے تعلقات دونوں ممالک کے لئے فائدہ مند ہیں لیکن دونوں ممالک کے باہمی تعلقات کے کچھ لوگ دشمن بھی ہیں اور دونوں ممالک کو دشمنوں کی مرضی کے برخلاف باہمی تعلقات کو مضبوط اور مستحکم بنانے پر توجہ دینی چاہیے۔

رہبر معظم انقلاب اسلامی نے دہشت گردوں کی دونوں ممالک کی سرحدوں پر سرگرمیوں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے فرمایا: غیر علاقائی طاقتیں دہشت گردوں کے ذریعہ دونوں ممالک کے تعلقات پر اثر انداز ہونے کی کوشش کررہی ہیں لہذا دونوں ممالک کے حکام کو دشمنوں کی اس سازش کو ناکام بنانا چاہیے۔

رہبر معظم نے پاکستان کی طرف سے حالیہ  سیلاب سے متاثرہ علاقوں کی امداد ، مشہد مقدس اور حضرت امام رضا علیہ السلام کی زیارت سے پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان کے  دورہ ایران کے آغاز کی طرف اشارہ کرتے ہوئے فرمایا: اللہ تعالی اس سفر کو دونوں ممالک اور قوموں کے لئے مفید اور تعمیری قراردے۔

اس ملاقات میں صدر حسن روحانی بھی موجود تھے ، پاکستانی وزیر اعظم عمران خان نے تہران میں اپنے مذاکرات کو بہت ہی مفید قرار دیتے ہوئے کہا کہ بہت سے مسائل حل ہوگئے ہیں۔

پاکستانی وزیر اعظم نے ایران اور ہندوستان کے تاریخی تعلقات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان پر مسلمانوں نے 600 سال حکومت کی اوراس پر ایران کا اتنا زیادہ اثر تھا کہ ہندوستان کی سرکاری زبان فارسی ہوگئی۔

عمران خان نے کہا کہ ہندوستان کی عظیم دولت اور ثروت کو انگریزوں نے بڑی بے رحمی اور بے دردی کے ساتھ  لوٹا اور تباہ کیا اور ہندوستان کے تعلیمی نظام کوبھی تباہ کردیا۔

عمران خان نے کہا کہ بعض تہران اور اسلام آباد کےدرمیان اچھے تعلقات کے دشمن ہیں اور ہم دونوں ممالک کے تعلقات کو مضبوط اور مستحکم  بنانے کے لئے پرعزم ہیں اور ایرانی حکومت کے ساتھ مسلسل رابطہ میں رہیں گے۔

News Code 1889926

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 9 + 5 =