اقوام متحدہ کا بحرینی شہریوں کی شہریت منسوخ کرنے پر تحفظات کا اظہار

اقوام متحدہ نے بحرین کی امریکہ اور اسرائیل نواز حکومت کی جانب سے مبنیہ طور پر بحرینی شہریوں کی شہریت منسوخ کرنے پر شدید تشویش اور تحفظات کا اظہار کیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے النشرہ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ اقوام متحدہ نے بحرین کی امریکہ اور اسرائیل نواز حکومت کی جانب سے مبنیہ طور پر بحرینی شہریوں کی شہریت منسوخ کرنے پر شدید تشویش اور تحفظات کا اظہار کیا ہے۔ اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے کمشنر مائیکل بیچلٹ نے کہا کہ "بحرین کی عدالت میں مجرم قرار دیئے جانے والوں میں 17 کم عمر لڑکے ہیں جن کی عمریں 15 سے 17 برس ہے "۔

انہوں نے کہا کہ " بحرین میں قانون کے اطلاق پر سخت تحفظات جنم لے چکے ہیں خاص طور پر اجتماعی ٹرائل کے ذریعے سزائیں سنانے کے عمل میں شفافیت مشکوک ہے" ۔

انہوں نے کہا کہ "شہریت منسوخ کرنے کا عمل یکطرفہ اور تفریق کی بنیاد پر نہیں ہونا چاہیے اس طرح متاثرہ شخص کے اہلخانہ ایسے حالات کا شکار ہو سکتے ہیں جہاں ان کے انسانی حقوق متاثر ہو سکتے ہیں" ۔ ان کا کہنا تھا کہ " شہریت منسوخ کرنا عالمی قوانین کے منافی ہے۔

انسانی حقوق کی چیف نے مجرم قرار دیے گئے افراد کے خلاف غیرانسانی سلوک سے متعلق رپورٹس پر بھی تحفظات کا اظہار کیا۔ انہوں نے بحرین اتھارٹی پر زور دیا کہ وہ انسانی حقوق کے منافی اقدامات کی روک تھام کے لیے فوری اقدام اٹھائے۔ ادھر ایمنسٹی انٹرنیشنل نے بحرین میں سزاؤں کو عالمی عدالتی معیارات کے منافی قرار دے دیا ہے۔ واضح رہے کہ بحرین کی ایک عدالت نے 138 بحرینی شہریوں کی شہریت منسوخ کرتے ہوئے انہیں قید کی سزائیں سنادی ہیں۔ انسانی حقوق کی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل نے بحرین کےعدالتی فیصلے کو انصاف کے ساتھ مذاق  قرار دیا تھا۔

News Code 1889823

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 8 + 5 =