پاکستان میں شیعہ مسلمانوں کے خلاف وہابی دہشت گردی کا سلسلہ جاری/ 14 مسلمان شہید

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے ساحلی علاقے اورماڑہ کے قریب مکران کوسٹل ہائی وے پر وہابید ہشت گردوں نے بس میں شناختی کارڈ چیک کرنے کے بعد بس سے 14 شیعہ مسافروں کو اتار کو بہیمانہ طور پر شہید کردیا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ڈان کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے ساحلی علاقے اورماڑہ کے قریب مکران کوسٹل ہائی وے پر وہابید ہشت گردوں نے بس میں شناختی کارڈ چیک کرنے کے بعد بس سے 14 شیعہ مسافروں کو اتار کو بہیمانہ طور پر شہید کردیا۔لیویز ذرائع کے مطابق یہ  افسوسناک اور دہشت گردانہ واقعہ اورماڑہ کے علاقے بزی چڑھائی کے قریب پیش آیا، جہاں پر وہابی دہشت گردوں نے کراچی سے گوادر اور گوادر سے کراچی جانے والی مختلف مسافر بسوں کو روکا۔وہابی دہشت گردوں نے مختلف افراد کو ان کے شناختی کارڈ سے شناخت کرنے کے بعد بس سے اتارا، کچھ فاصلے پر لے جا کر ان کے ہاتھ پیچھے سے باندھ کر انہیں فائرنگ کر کے شہید کر دیا۔

انسپکٹر جنرل پولیس (آئی جی پی) بلوچستان محسن حسن بٹ کے مطابق بزی ٹاپ کے علاقے میں رات 12.30 سے ایک بجے کے درمیان تقریباً 15 سے 20 مسلح  دہشت گردوں نے کراچی سے گوادر آنے اور جانے والی 5 سے 6 بسوں کو روک کر اس میں موجود مسافروں کے شناختی کارڈ دیکھے اور انہیں گاڑی سے اتار کر قتل کردیا۔

انہوں نے کہا کہ یہ  واقعہ ٹارگٹ کلنگ ہے اور متاثرہ افراد کو ان کے شناختی کارڈ دیکھ کر قریب فاصلے سے گولیاں ماری گئیں۔

فائرنگ کے واقعے میں کُل 16 مسافروں میں سے 14 کو شہید کیا گیا جبکہ 2 بھاگنے میں کامیاب ہوئے اور قریبی لیویز چیک پوسٹ پہنچےپولیس نے واقعہ سے متعلق تحقیقات کا آغاز کردیا ہے۔ ذرائع کے مطابق وہابی دہشت گرد پاکستان کی ارضي سالمیت اور امن کے لئے بہت بڑا خطرہ بن گئے ہیں۔

News Code 1889792

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 9 =