عراقی حکومت کو عراق سے امریکی فوجیوں کے جلد از جلد انخلا پر توجہ مبذول کرنی چاہیے

رہبر معظم انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے عراق کے وزير اعظم عادل عبدالمہدی اور ان کے ہمراہ وفد سے ملاقات میں فرمایا: عراقی حکومت کو عراق سے امریکی فوجیوں کے جلد از جلد انخلا پر توجہ مبذول کرنی چاہیے۔

مہر خبررساں ایجنسی کے نامہ نگار کی رپورٹ کے مطابق رہبر معظم انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے عراق کے وزير اعظم عادل عبدالمہدی اور ان کے ہمراہ وفد سے ملاقات میں فرمایا: عراقی حکومت کو عراق سے امریکی فوجیوں کے سریع اورجلد از جلد انخلا پر توجہ مبذول کرنی چاہیے۔

رہبر معظم انقلاب اسلامی نے ایرانی اور عراقی اقوام کے اعتقادی، ثقافتی اور تاریخی تعلقات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے فرمایا: ایران اور عراق کے باہمی تعلقات دو ہمسایہ ممالک کے تعلقات سے بالا تر ہیں۔ ایرانی حکومت اورعوام ، عراق کی پیشرفت اور ترقی کو اپنی پیشرفت اور ترقی سمجھتے ہیں لیکن امریکی حکام اپنے لفظی بیانات کے برعکس عراق میں جمہوریت اور عراق کے موجودہ حکام کو اپنے لئے نقصاندہ سمجھتے ہیں۔

رہبر معظم انقلاب اسلامی نے عراقی وزیر اعظم کے عراق اور خطے کے مسائل کے بارے میں ہوش مندانہ اور حکیمانہ مؤقف کی تعریف کرتے ہوئے فرمایا: عراقی جوان اور عراقی دانشور عراق کا عظیم اور بہت بڑا سرمایہ ہیں ، عراقی جوانوں نے عراق کو داعش دہشت گرد تنظیم کے تسلط سے بچانے کے لئے اہم اور اساسی کردار ادا کیا اور موصل پر جب داعش کا قبضہ ہوگیا تھا تو اسو قت  امریکہ اور اس کے اتحادی عرب ممالک داعش کو ہتھیار اور مالی مدد فراہم کررہے تھے۔

رہبر معظم انقلاب اسلامی نے فرمایا: عراق کے موجود سیاسی حکمراں ، امریکہ اور سعودی عرب کو پسند نہیں ہیں کیونکہ عراق کے موجود سیاسی حکام مستقل عمل کررہے ہیں جو امریکہ اور اس کے اتحادیوں کے لئے قابل قبول نہیں ہے۔

رہبر معظم انقلاب اسلامی نے فرمایا: امریکہ اور سعودی عرب کے لفظی اور سیاسی بیانات اور ان کی اندرونی نیات میں  بہت بڑا فرق ہے ، وہ ایک دور میں داعش کے دوست تھے اور آج جب عراقی حکومت اور عوام نے داعش پر غلبہ پالیا تو وہ عراق کے ساتھ دوستی کا دم بھرنے لگے ہیں۔

رہبر معظم انقلاب اسلامی نے فرمایا: عراقی حکومت کو عراق سے جلد از جلد امریکی فوج کے انخلا کو یقنی بنانا چاہیے کیونکہ امریکی فوج کی خطے اور علاقائی ممالک میں موجودگی دہشت گردی کے فروغ کا اصلی سبب ہے۔

اس ملاقات میں صدر حسن روحانی بھی موجود تھے ۔ عراق کے وزیر اعظم عادل عبدالمہدی نے رہبر معظم انقلاب اسلامی کے ساتھ اپنی ملاقات پر خوشی اور مسرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہم ایرانی حکومت اور عوام کے شکر گزار ہیں جنھوں نے داعش دہشت گرد تنظیم کو شکست دینے کے سلسلے میں عراقی حکومت اور عوام کی بھر پور حمایت کی۔ عادل عبدالمہدی نے کہا کہ داعشی عناصر آج بھی عراق میں موجود ہیں لیکن اس کے باوجود عراق میں امن و سلامتی میں روزبروز استحکام پیدا ہورہا ہے۔ عراقی وزیر اعظم نے ایران اور عراق کے تعلقات کو خصوصی قراردیتے ہوئے کہا کہ ہم ایران کے خلاف امریکی پابندیوں کوہر گز تسلیم نہیں کریں گے۔

News Code 1889484

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 2 =