یوکرین کے صدارتی انتخابات میں کامیڈین نے موجودہ صدر کو شکست دے دی

یوکرین کے صدارتی انتخابات میں سیاسی پس منظر نہ ہونے کے باوجود کامیڈین ولادمیر زیلنسکی نے ملک کے موجودہ صدر و سابق وزیر اعظم کو پہلے مرحلے میں شکست دے دی۔

مہر خبررساں ایجنسی نے رائٹرز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ یوکرین کے صدارتی انتخابات میں سیاسی پس منظر نہ ہونے کے باوجود کامیڈین ولادمیر زیلنسکی نے ملک کے موجودہ صدر و سابق وزیر اعظم کو پہلے مرحلے میں شکست دے دی۔ پیر کو تمام پولنگ اسٹیشنز کے نتائج کے مطابق زیلنسکی نے اتوار کو ہونے والی ووٹنگ میں سے 30 فیصد ووٹ حاصل کیے۔ ان کے مدمقابل موجودہ صدر پیٹرو پورو شینکو نے 16فیصد ووٹ حاصل کیے جبکہ سابق وزیر اعظم یولیا ٹیمو شینکو نے 13فیصد ووٹ لیے۔ انتخابات میں کُل 39امیدواروں نے حصہ لیا لیکن کوئی بھی امیدوار 50فیصد ووٹ حاصل نہیں کر سکا اور اب صف اول کے دو امیدوار 21اپریل کو حتمی مقابلے میں صف آرا ہوں گے۔ کامیڈین زیلنسکی نے کہا کہ یہ عظیم فتح کی جانب پہلا قدم ہے تاہم انہوں نے اس تاثر کو مسترد کردیا کہ وہ حکومت کے قیام اور واضح برتری کے لیے ٹیمو شینکو سے کسی قسم کا اتحاد کریں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم کسی کے ساتھ کوئی ڈیل نہیں کریں گے، ہم نوجوان لوگ ہیں، ہم اپنے ملک کے مستقل میں ماضی کو نہیں دیکھنا چاہتے۔ مشہور کامیڈیشن اور ایک اسکول ٹیچر سے صدارت کے منصب کے مضبوط امیدوار بننے والے زیلنسکی نے اپنی انتخابی مہم کے دوران عوام سے وعدہ کیا تھا کہ وہ کرپشن کے خلاف جنگ کریں گے اور کسی بھی قسم کے کرپشن میں ملوث شخص کے عوامی عہدہ سنبھالنے پر پابندی کی تجویز پیش کی تھی۔ دوسری جانب بڑے پیمانے پر ووٹ خریدنے کے الزامات بھی عائد کیے گئے اور پولیس کا کہنا ہے کہ انہیں صرف انتخابات کے دن قانون کی خلاف ورزی کی 2ہزار 100 شکایات موصول ہوئیں جبکہ اس سے قبل رشوت اور پولنگ کے مقام سے بیلٹ ہٹانے کی بھی شکایات ملی تھیں۔

News Code 1889344

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 13 =