پاکستان کی وفاقی کابینہ میں دہشت گردوں کے حامی اور سہولتکار موجود

پاکستان پیپلز پارٹی کے سربراہ بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ عمران خان نے اپنی کابینہ میں ایک ایسے وزیر کا اضافہ کر لیا ہے جس کا نام بینظیر بھٹو قتل کیس میں بھی شامل ہے اور پاکستان کی وفاقی کابینہ میں دہشت گردوں کے سہولت کاراور حامی موجود ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ڈان کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی کے سربراہ  بلاول بھٹو زرداری نے لاڑکانہ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ عمران خان نے اپنی کابینہ میں ایک ایسے وزیر کا اضافہ کر لیا ہے جس کا نام بینظیر بھٹو قتل کیس میں بھی شامل  ہے اور پاکستان کی وفاقی کابینہ میں دہشت گردوں کے سہولت کاراور حامی موجود ہیں۔ بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ ہم پیغام دینا چاہتے ہیں کہ آج بھی ذوالفقار علی بھٹو کے نظریے پر کاربند ہیں اور 4 اپریل کو ہم بھٹو سے اپنی محبت کا مظاہرہ کریں گے اور انہیں خراج عقیدت پیش کریں گے۔ٹرین مارچ کا حوالہ دیتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ٹرین میں سفر کا کوئی ایجنڈا نہیں تھا، کراچی سے لاڑکانہ تک ٹرین مارچ نہیں صرف ٹرین کا سفر کیا اور گڑھی خدا بخش میں 4 اپریل کو شہید بھٹو کی برسی کے لیے آنا تھا۔بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ بینظیر بھٹو کو شہید کرنے میں دہشت گردوں کا ہاتھ تھا، نہ صرف دہشت گردوں کا ہاتھ تھا بلکہ ریاست اور دہشت گردوں کا جو تعلق تھا وہ سامنے بھی آیا ہے، میں نہ صرف ذاتی طور پر بلکہ پاکستان کے مستقبل کے لیے سمجھتا ہوں کہ دہشت گردوں اور کالعدم تنظیموں کے خلاف کچھ کرنا پڑے گا، کوئی ملک یہ برداشت نہیں کرے گا اس طرح کے گروپ ان کے ملک اور دوسرے ملک میں نفرت پھیلائیں اور یہ پاکستان کا ریاستی موقف ہے۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی وزرا دہشت گردوں کے سہولت کار ہیں اور وزیراعظم عمران خان نے اپنی کابینہ میں ایک ایسے ہی وزیر کا اضافہ کیا ہے جن کا نہ صرف بینظیر بھٹو قتل کیس سے تعلق ہے بلکہ صحافی ڈینئیل پرل کے قتل اور دیگر معاملات میں بھی اس کا کردار رہا ہے۔

News Code 1889303

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 8 + 2 =