رواں برس کا نعرہ  مزاحمتی اقتصاد کا روح رواں ہے

اسلامی جمہوریہ ایران کے دارالحکومت تہران میں نماز جمعہ کے عارضی خطیب نے رواں برس کے نعرے کو مزاحمتی اقتصاد کا روح رواں قراردیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کے نامہ نگار کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کے دارالحکومت تہران میں نماز جمعہ حجۃ الاسلام والمسلمین محمد جواد حاج علی اکبری کی امامت میں منعقد ہوئی ، جس میں لاکھوں افراد نے شرکت کی۔ تہران کے عارضی خطیب جمعہ نے رواں برس کے نعرے کو مزاحمتی اقتصاد کا روح رواں قراردیتے ہوئے کہا ہے کہ اس سال کو رہبر معظم انقلاب اسلامی نے رونق پیداوارکے نام سے موسوم کیا ہے اور قومی اقتصاد کی تقویت ، دشمن کی اقتصادی خصومت کے خلاف مؤثر ثابت ہوسکتی ہے۔ انھوں نے کہا کہ رونق پیداوار کے نعرے کو عملی جامہ پہنانے کے لئے تمام شرائط موجود ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ایران کا داخلی بازار بھی عظیم ہے جبکہ ایران کے ہمسایہ ممالک میں 600 ملین کا عظیم بازار موجود ہے۔ ایران اپنی داخلی ظرفیتوں اور اطراف کے ممالک میں موجود ظرفیتوں سے بھر پور استفادہ کرتے ہوئے پیداوار کو بارونق بنا سکتا ہے اور اقتصادی میدان میں بھی دشمن کو شکست اور ناکامی سے دوچار کرسکتا ہے۔ خطیب جمعہ نے ماہ رجب اور عید بعثت کی فضیلت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ بعثت کا دن اسلامی تاریخ کا عظيم اور بے مثال دن ہے یہ دن آنحضور(ص) کی بعثت کا دن اور مسلمانوں کی عید کا دن ہے۔

News Code 1889247

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 5 =