پاکستان کے سابق وزیر اعظم نواز شریف کوٹ لکھپت جیل سے رہا ہوگئے

پاکستانی سپریم کورٹ نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کی طبی بنیاروں پر ضمانت منظور کرلی جس کے بعد نواز شریف کی ضمانت پر رہائی کا روبکار کوٹ لکھپت جیل کے حکام کو موصول ہوا اور قانونی کارروائی مکمل کئے جانے کے بعد انہیں رہا کردیا گیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایکس پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستانی سپریم کورٹ نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کی طبی بنیاروں پر ضمانت منظور کرلی جس کے بعد نواز شریف کی ضمانت پر رہائی کا روبکار کوٹ لکھپت جیل  کے حکام کو موصول ہوا اور قانونی کارروائی مکمل کئے جانے کے بعد انہیں رہا کردیا گیا ہے۔    اطلاعات کے مطابق سابق وزیر اعظم نواز شریف کی العزیزیہ ریفرنس میں طبی بنیاروں پر ضمانت کا روبکار لاہور کی کوٹ لکھپت جیل کو بذریعہ فیکس موصول ہوا، نواز شریف کا روبکار  رجسٹرار سپریم کورٹ نے جاری کیا جس میں کہا گیا کہ نوازشریف کسی اور کیس میں مطلوب نہیں تو انہیں رہا کردیا جائے۔ بعد ازاں قانونی کارروائی مکمل کئے جانے کے بعد انہیں رہا کردیا گیا۔   اس سے قبل  چیف جسٹس پاکستان آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بنچ نے سابق وزیراعظم نواز شریف کی طبی بنیادوں پر درخواستِ ضمانت کی سماعت کی۔ سپریم کورٹ نے 50 لاکھ روپے کے مچلکے کے عوض نواز شریف کی 6 ہفتوں کے لیے ضمانت منظور کرلی، تاہم انہیں بیرون ملک جانے کی اجازت نہیں ہوگی، اور وہ پاکستان میں ہی اپنی مرضی کے ڈاکٹر اور اسپتال سے علاج کراسکتے ہیں۔سپریم کورٹ نے نواز شریف کو 2 ضمانتی بھی دینے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ انہیں چھ ہفتے بعد خود گرفتاری دینی ہوگی، اگر انہوں نے ایسا نہ کیا تو انہیں گرفتار کرکے پیش کیا جائے۔ عدالت عظمیٰ نے فیصلے میں کہا کہ اگر نواز شریف کو طبی بنیادوں پر دوبارہ ضمانت درکار ہو تو اس کے لئے انہیں اسلام آباد ہائی کورٹ میں دوبارہ درخواست دینی ہوگی، پھر ہائی کورٹ میرٹ پر کوئی فیصلہ کرے گی۔

News Code 1889184

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 15 =