بھارت نے او آئی سی کے اجلاس کا مشترکہ اعلامیہ مسترد کردیا

بھارتی وزیرخارجہ سشما سوارج نے مسئلہ کشمیر کو مکمل طور پر اندرونی معاملہ قرار دیتے ہوئے اسلامی تعاون تنظیم کی جانب سے کشمیر میں بھارت کے اقدامات کے خلاف منظور کی گئی قرارداد مشترکہ اعلامیہ کو مسترد کر دیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے بھارتی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ بھارتی وزیرخارجہ سشما سوارج نے مسئلہ کشمیر کو مکمل طور پر اندرونی معاملہ قرار دیتے ہوئے اسلامی تعاون تنظیم کی جانب سے کشمیر میں بھارت کے اقدامات کے خلاف منظور کی گئی قرارداد مشترکہ اعلامیہ کو مسترد کر دیا ہے۔ بھارتی دفتر خارجہ کے بیان کے مطابق متحدہ عرب امارات کے شہر ابوظہبی میں اوآئی سی کے وزرائے خارجہ کے 46 ویں اجلاس میں رکن ریاستوں نے قرارداد منظور کی تھی جس کے متن میں واضح کیا گیا تھا کہ جموں و کشمیر دونوں ممالک پاکستان اور بھارت کے درمیان بنیادی تنازع ہے اور یہ قرارداد جنوبی ایشیا میں امن کے خواب کے لیے ناگزیر ہے۔ او آئی سی کی قرارداد میں بھارت کے زیر انتظام کشمیر میں بھارت کے حالیہ اقدامات کی سخت الفاظ میں مذمت کی گئی تھی اور وادی میں مظالم اور انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں پرگہری تشویش کا اظہار کیا گیا تھا۔ بھارت کی وزارت خارجہ سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ جموں و کشمیر کے حوالے سے قرارداد کے معاملے پر ہمارا موقف واضح اور ٹھوس ہے، ہم تجدید کرتے ہیں کہ جموں و کشمیر بھارت کا حصہ ہے اور یہ مکمل طور پر بھارت کا اندرونی معاملہ ہے۔

News Code 1888572

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 7 + 7 =